ہمیں ٹرمپ کے مشوروں کی ضرورت نہیں: فرانسیسی صدر

فرانسوا اولاند تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

فرانسیسی صدر فرانسوا اولاند نے جرمنی کی فراخ دلانہ پالیسی پر نومنتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی کڑی نکتہ چینی کو رد کر دیا ہے۔

انھوں نے کہا: 'یورپ کو کیا کرنا چاہیے اور کیا نہیں، اس کے لیے اسے کسی بیرونی مشورے کی ضرورت نہیں ہے۔'

ٹرمپ نے جرمن چانسلر انگلیلا میرکل کے بارے میں کہا تھا کہ انھوں نے بڑے پیمانے پر نقل مکانی کی اجازت دے کر 'تباہ کن غلطی' کی ہے۔

اولاند نے امریکی ٹیلی ویژن سی این این کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا: 'میرے خیال سے کسی امریکی نومنتخب صدر کا دوسرے ملکوں کی سیاست میں اس طرح کھلم کھلا دخل دینا نامناسب ہے۔

٭ ’میرکل کی تباہ کن غلطی، تارکین وطن کو داخلے کی اجازت‘

میرکل نے اس کے جواب میں کہا تھا کہ 'ہم یورپیوں کی تقدیر خود ہمارے ہاتھوں میں ہے۔'

فرانس کے صدر نے کہا کہ یورپی یونین 'بین الاوقیانوس تعاون کے لیے تیار ہے' لیکن اس کی بنیاد 'اپنے مفادات اور اقدار' پر ہو گی۔

سابق فرانسیسی وزیرِ اعظم مینوئل والس نے کہا کہ ٹرمپ کا بیان 'یورپ کے خلاف جنگ' کے مترادف ہے۔

والس اس برس صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے خواہش مند ہیں، تاہم ان کی اپنی ہی جماعت کے کچھ ارکان ان سے آگے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں