امریکہ میں طوفان کے باعث کم از کم 18 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

امریکہ میں ایمرجنسی حکام کا کہنا ہے کہ ریاست جارجیا میں خراب موسمی حالات کے نتیجے میں 18 کم از کم افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

ریاست جارجیا کے گورنر نیتھن ڈیل کا کہنا ہے کہ ریاست کے چار علاقوں میں ہنگامی حالت نافذ کر دی گئی ہے۔

قومی موسمیاتی ادارے کا کہنا ہے کہ جارجیا اور فلوریڈا میں مزید طوفان اور ’ٹورنیڈو‘ کا امکان ہے۔

دوسری جانب سنیچر کو میسیسپی میں آنے والے طوفان کے نتیجے میں چار افراد ہلاک ہوئے۔

جارجیا ایمرجنسی مینجمنٹ ایجنسی نے بتایا کہ جارجیا میں ہلاک ہونے والے 14 افراد کا تعلق جنوبی کک، بروکس اور بیرن کے علاقوں میں سے تھا جبکہ چار افراد میسیسیپی میں سنیچر کو ہلاک ہوئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption جارجیا میں سات افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں

ان میں سے سات افراد کک علاقے میں ایک عارضی مکان میں رہائیش پذیر تھے جب طوفان ان کے مکان سے ٹکرایا۔ سب سے زیادہ ہلاکتیں وہیں ہوئی ہیں۔

کک کاؤنٹی میں موت کے تفتیش کار ٹم پروس نے کہا ہے کہ بہت سے موبائل یا عارضی مکانات زمیں بوس ہو گئے ہیں۔ یہ مکانات ایڈل شہر کے پاس ایک پارک میں قائم کیے گئے تھے۔ انھوں نے بتایا کہ ایمرجنسی ٹیم ابھی بھی زندہ افراد کی تلاش کر رہی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ اس پارک میں تقریبا 40 مکانات تھے جن میں سے تقریبا نصف برباد ہو گئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption جارجیا کے دیہی علاقوں میں ہنگامی صورت حال کا اعلان کیا گیا ہے

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس موقع پر گورنر نیتھن ڈیل کے ساتھ بات چیت میں جانی نقصان پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

بروکس کاؤنٹی میں کورونر یا میں موت کے تفتیش کار مائکل ملر نے کہا ہے دو افراد طوفان کی زد میں آ کر ہلاک ہو گئے ہیں جب ایک عارضی مکان کو ہوا 100 گز دور اڑا کر لے گئی۔

جنوبی مسیسیپی میں چار افراد ہلاک ہوئے ہیں اور وہاں طوفان کا زور 218 کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے بھی زیادہ تھا۔ حکام کا کہنا ہے کہ یہاں 50 دیگر افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔ اور تقریبا 500 گھر تباہ ہو گئے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں