ایک ڈالر میں شادی کرنے والے کینیا کے جوڑے کے لیے پرتعیش تقریب

تصویر کے کاپی رائٹ AALTONEN JUMBA
Image caption ان کی شادی کے کل خرچ کی خبر سوشل میڈیا پر پھیل گئی تھی جس کے بعد بہت سے لوگوں نے انھیں مدد کی پیشکش کی

صرف ایک ڈالر خرچ سے شادی کرنے والے کینیا کے جوڑے نے ویلنٹائن ڈے کے موقعے پر خیر خواہوں کی مالی مدد سے ایک پر تعیش تقریب میں اپنی شادی کے عہد کی تجدید کی ہے۔

ان کی شادی کے کل خرچ کی خبر سوشل میڈیا پر پھیل گئی تھی جس کے بعد بہت سے لوگوں نے انھیں مدد کی پیشکش کی۔

ولسن اور این موتورا نے سنہ 2016 میں دو بار اپنی شادی کی تقریب معطل کی کیونکہ وہ اس پر خرچ کرنے کے لیے 300 امریکی ڈالر جمع نہ کر سکے تھے۔ رواں سال انھوں نے کم از کم بجٹ میں شادی کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

اپنی شادی کی پہلی تقریب میں دونوں نے جینز اور ٹی شرٹ پہننی تھی اور سٹیل کے دو رنگز کو بطور انگوٹھی استعمال کیا تھا۔

کینیا میں میڈیا کے اندازے کے مطابق نائیروبی کے ایک معروف ہوٹل میں ان کی حالیہ تقریب کا خرچ 35 ہزار ڈالر تک ہو سکتا ہے۔

نائیروبی میں بی بی سی کے نامہ نگار پیٹر وائے کا کہنا ہے کہ کیونکہ جوڑا پہلے سے شادی شدہ تھا اسی لیے حالیہ تقریب میں انھوں نے صرف انگوٹھیاں ایک دوسری کو پہننائیں۔

Image caption اپنی شادی کی پہلی تقریب میں دونوں نے جینز اور ٹی شرٹ پہننی تھی

ہمارے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ انٹرنیٹ پر یہ سوال اٹھا رہے ہیں کہ منتظمین نے اس تقریب پر اتنا خرچہ کرنے کے بجائے جوڑے کی مالی امداد کیوں نہیں کی؟

تاہم تقریب کی مرکزی منتظم کمپنی سلق ایونٹس پلینر کا کہنا ہے کہ جوڑے کو پہلے ہی مالی امداد کی جا چکی ہے اور اس تقریب کا معاملہ رومانوی تھا۔

کمپنی کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ’جوڑے کو دیگر افراد نے پہلے ہی مالی امداد دی ہے۔ مختلف لوگوں نے مختلف سطح پر ان کی مدد کی ہے۔ انھیں ایک فارم، ایک ہنی مون، اور بزنس شروع کرنے کے لیے رقم کا وعدہ پہلے ہی مل چکا ہے۔‘

ان کا مزید کہنا تھا کہ چونکہ یہ سب پہلے مل چکا ہے، اور ان کی پہلے شادی کی تقریب نہیں ہو سکی تھی، تو کیوں نہ انھیں یہ دیا جائے۔

تاہم ترجمان نے حالیہ تقریب پر کل اخراجات کی رقم نہیں بتائی کیونکہ ان کے مطابق بہت سے لوگوں نے عطیات اشیا کی مد میں دیے۔

اسی بارے میں