’موگابے کی لاش بھی انتخابات جیت جائے گی‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption حالیہ عرصے میں 92 سالہ موگابے نے اپنی عوامی مصروفیات میں کچھ کمی کر دی ہے

زمبابوے کے بانوے سالہ صدر رابرٹ موگابے کی اہلیہ کا کہنا ہے کہ ان کے شوہر اتنے مقبول ہیں کہ ان کے مرنے کی صورت میں اگر ان کی لاش کو انتخابات میں کھڑا کیا جائے تو وہ بھی ملک میں اگلے سال ہونے والے انتخابات جیت جائے گی۔

گریس موگابے نے یہ بات ایک انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہی ہے۔

رابرٹ موگابے سنہ 1980 سے زمبابوے میں اقتدار میں ہیں اور ماضی میں ان پر ملک میں ہونے والے انتخابات میں دھاندلی کروانے کے الزامات بھی لگتے رہے ہیں۔

ملک کے دارالحکومت ہرارے میں ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے 51 سالہ گریس موگابے کا کہنا تھا کہ ’ایک دن جب خدا کی مرضی سے رابرٹ موگابے فوت ہو جائیں گے تو ہم ان کی لاش کو انتخابات میں کھڑا کریں گے۔‘

زمبابوے کی خاتونِ اول کا مزید کہنا تھا کہ ’آپ دیکھیں گے کہ لوگ موگابے کی لاش کو بھی ووٹ دیں گے، میں یہ بات آپ کو سنجیدگی سے بتا رہی ہوں۔ لوگ ایسا صدر کے ساتھ اپنا پیار دیکھانے کے لیے کریں گے۔‘

خیال رہے کہ ملک میں اگلے سال ہونے والے انتخابات میں صدر موگابے کی جماعت انھیں دوبارہ بطور امیداوار کھڑا کرنا چاہتی ہے۔

حالیہ عرصے میں 92 سالہ موگابے نے اپنی عوامی مصروفیات میں کچھ کمی کر دی ہے۔

صدر موگابے کی صحت کے بارے میں مختلف افوائیں بھی سامنے آتی رہی ہیں اور گزشتہ برس جب وہ اپنے طبی چیک اپ کے لیے دبئی گئے تھے تو ان کے فوت ہو جانے کی افواہ پھیل گئی تھی۔