کم جونگ نام کی ہلاکت: ملائیشیا نے شمالی کوریا کے سفیر کو ملک بدر کر دیا

کم جونگ نام تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption شمالی کوریا کے حکمراں کم جونگ اُن کے سوتیلے بھائی کم جونگ نام 13 فروری کو ملائیشیا میں ہلاک ہوئے تھے

ملائیشیا کا کہنا ہے کہ اس نے شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن کے سوتیلے بھائی کم جونگ نام کی ہلاکت پر شمالی کوریا کے سفیر کو ملک بدر کر دیا ہے۔

ملائیشیا کی وزارتِ خارجہ نے ایک بیان میں شمالی کوریا کے سفیر کینگ چول کو 48 گھنٹے کے اندر ملک چھوڑنے کا حکم دیا ہے۔

کم جونگ نام کی ہلاکت: ’میری گرفتاری ملائیشیا کی سازش تھی‘

کم جونگ نام کا قتل،دو خواتین پر فرد جرم عائد کر دی گئی

شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان کے سوتیلے بھائی کوالالمپور میں ہلاک

ملائیشیا کی وزارتِ خارجہ کی جانب سے سنیچر کو جاری کیے جانے والے ایک بیان کے مطابق شمالی کوریا کے سفیر کینگ چول کو اس وقت ’ناپسندیدہ شخصیت‘ قرار دیا گیا جب انھوں نے کہا کہ ان کا ملک ’ملائیشیا پر کم جونگ نام کی ہلاکت کے حوالے سے کی جانے والی تفتیش پر بھروسہ نہیں کر سکتا اور یہ کہ اس تفتیش پر مداخلت کی جا رہی ہے۔‘

ملائیشیا کے وزیرِ خارجہ انیفا عمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ان کے ملک نے شمالی کوریا کے سفیر سے ان کی جانب سے دیے جانے والے بیان پر معافی کا مطالبہ کیا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا ’ملائیشیا اپنے خلاف کی جانے والی کسی بھی بدتمیزی یا اس کی ساکھ کو تباہ کرنے کی کسی بھی کوشش کے خلاف اپنا شدید ردِعمل دے گا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ملائیشیا کی وزارتِ خارجہ کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق شمالی کوریا کے سفیر کینگ چول کو 'ناپسندیدہ شخصیت' قرار دیا گیا

واضح رہے کہ شمالی کوریا کے حکمراں کم جونگ اُن کے سوتیلے بھائی کم جونگ نام 13 فروری کو ملائیشیا میں ہلاک ہوئے تھے۔ کم جونگ نام کے چہرے پر ایک اعصاب شکن کیمیکل پھینکا گیا تھا جس سے ان کی موت ہو گئی تھی۔

اگرچہ ملائیشیا نے شمالی کوریا پر کم جونگ نام کی ہلاکت کا براہِ راست الزام عائد نہیں کیا تھا تاہم اس پر شبہہ کا اظہار کیا تھا۔

کم جونگ نام کی عمر 45 برس تھی اور انھیں ملائیشیائی دارالحکومت کے ہوائی اڈے پر نشانہ بنایا گیا۔

وہ شمالی کوریا کے سابق سربراہ کم جونگ ال کے سب سے بڑے صاحبزادے تھے۔

اسی بارے میں