ایتھوپیا میں کچرے کے نیچے دب کر 50 افراد ہلاک

ایتھوپیا تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption لینڈ سلائڈنگ سے وہاں عارضی گھرزمین بوس ہو کر ہزاروں ٹن کوڑے کے نتیجے دب کر رہ گئے ہیں

افریقی ملک ایتھوپیا کے دارالحکومت ادیدس ابابا کے نواح میں کوڑے کرکٹ کو اکٹھا کرنے کے مقام پرلینڈ سلائیڈنگ کے نتیجے میں کم از کم 50 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق سنیچر کی شب ہونے والی سلائیڈنگ کے وقت وہاں ڈیڑھ سو افراد موجود تھے جبکہ درجنوں اب بھی لاپتہ ہیں۔

وہاں موجود عارضی گھرزمین بوس ہو کر ہزاروں ٹن کوڑے کے نتیجے دب کر رہ گئے ہیں۔

یہ جگہ گذشتہ پانچ دہائیوں سے زیادہ عرصے سے دارالحکومت کے کوڑے کرکٹ کو پھینکنے کے لیے استعمال ہو رہی ہے۔

وہاں کے ایک مقامی رہائشی نے خبر رساں ادارے اے پی کو بتایا کہ ان کے خاندان کے گھروں کو لینڈ سلائڈ نے نگل لیا۔

'میری ماں اور میری تین بہنیں اس وقت وہیں موجود تھی جب لینڈ سلائیڈنگ ہوئی، اب میں ان سب کی قسمت کے بارے میں کچھ نہیں جانتا۔'

بہت سے لوگ اس جگہ پر رہنے کی کوشش کرتے رہے ہیں اور کچھ نے وہاں مستقل رہائش اختیار کر رکھی ہے۔

یہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ ہلاکتوں کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔

اس کے قریب ہی حکام افریقہ کا سب سے بڑا پلانٹ لگا رہے ہیں جس میں کوڑے کرکٹ سے توانائی حاصل کی جائے گی۔

یہ منصوبہ ہے کہ چالیں لاکھ افراد پر مشتمل آبادی والے اس شہر کے کوڑے سے بجلی پیدا کی جائے۔

اسی بارے میں