یروشلم میں چاقو سے حملہ کرنے والا فلسطینی شخص ہلاک، دو اسرائیلی اہلکار زخمی

یروشلم تصویر کے کاپی رائٹ AP

اسرائیل میں پولیس کا کہنا ہے کہ یروشلم کے قدیم شہر میں دو بارڈر گارڈز پر چاقو سے حملہ کرنے والے فلسطینی شخص کو گولی مار کر ہلاک کر دیا ہے۔

اس حملے دو بارڈر گارڈ زخمی ہوئے ہیں جبکہ فلسطینی شخص کا تعلق مقبوضہ مشرقی یروشلم سے بتایا گیا ہے۔

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ ایک گارڈ شدید زخمی ہے جبکہ دوسرے کو معمولی زخم آئے ہیں۔

خیال رہے کہ سنہ 1967 کی عرب اسرائیل جنگ کے بعد اسرائیل نے مشرقی یروشلم پر اپنا قبضہ قائم کر لیا تھا۔

خیال رہے کہ اسرائیل فلسطین تنازعے کی حالیہ لہر اکتوبر 2015 میں شروع ہوئی تھی جس میں اب تک 250 سے زائد فلسطینی اور 40 سے زائد اسرائیلی ہلاک ہوچکے ہیں۔

اسرائیلی حکام کے مطابق ہلاک کیے گئے ہلاک ہونے والے بیشتر فلسطینیوں میں چاقو یا اسلحے سے حملہ کرنے والوں سمیت لوگوں پر گاڑیوں سے ٹکر مارنے والے شامل ہیں جبکہ کئی فلسطینیوں کی ہلاکت مظاہروں، جھڑپوں اور غزا میں فضائی کارروائی میں ہوئی ہے۔

اسرائیل فلسطینیوں پر اشتعال انگیزی کا الزام عائد کرتا ہے جبکہ فلسطینی قیادت ان حملوں کا الزام دہائیوں سے اسرائیلی قبضے سے پیدا ہونے والی مایوسی پر عائد کرتی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں