آسٹریلوی پارلیمان کے فون نمبرز غلطی سے آن لائن

آسٹریلین پارلیمان تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایک رپورٹ کے مطابق آسٹریلوی اراکین پارلیمان کے ذاتی فون نمبر ایک سرکاری ویب سائٹ پر کئی ماہ تک نظر آتے رہے

آسٹریلیا کے بہت سے سیاستدانوں اور ان کے سٹاف کے ذاتی فون نمبرز غلطی سے انٹرنیٹ پر شائع ہو گئے ہیں۔

فیئر فیکس میڈیا نے خبر دی ہے کہ سابق وزیر اعظم کے نمبر تین ماہ سے زائد عرصے تک ایک سرکاری ویب سائٹ پر نظر آتے رہے۔

یہ تفصیل اس وقت تک نہیں دیکھی جا سکتی تھی جب تک کہ اس پر کرسر نہ لایا جائے یا پھر اسے کاپی کرکے کہیں پیسٹ کر کے نہ دیکھا جائے۔

بہر حال وزیر اعظم میلکم ٹرنبل اور بعض دوسرے اہم ارکان پارلیمان اس بھول یا غلطی سے غیر متاثر رہے۔

لیکن فیئرفیکس کا کہنا ہے کہ حزب اختلاف کے رہنما بل شارٹن اور سابق وزیر اعظم جولیا گیلارڈ، جان ہووارڈ اور پال کیٹنگ وغیرہ اس غلطی سے ضرور متاثر ہوئے ہیں۔

پارلیمانی سروس کے شعبے (ڈی پی ایس) کی ویب سائٹ سے اب ان معلومات کو ہٹا لیا گیا ہے۔

بی بی سی کو بھیجے جانے والے ایک بیان میں شعبے نے کہا ہے کہ 'یہ فون نمبر پارلیمانی فون اور ڈیٹا پر ہونے والے اخراجات کی ایک رپورٹ میں شامل تھے۔'

بیان میں کہا گیا ہے کہ اس رپورٹ کو ایک نجی کنٹریکٹر ٹیلکو مینجمنٹ نے تیار کیا تھا۔

ڈی پی ایس کے ایک ترجمان نے کہا: 'کنٹریکٹر کے ذریعے پیش کردہ تازہ ترین رپورٹ میں ہی پارلیمان اور شعبے کے سٹاف کے سرکاری فون نمبرز کو دیکھ پانا ممکن ہو سکا۔

'ڈی پی ایس نے اطلاع ملتے ہی ان دستاویزات کو ہٹا دیا اور اب وہ کنٹریکٹر کے ساتھ مل کر کام کر رہا ہے تاکہ غلطی کے اسباب کا پتہ چل سکے۔'

ترجمان نے بتایا کہ ان کا محکمہ پرائیویسی کے متعلق اراکین پارلیمان کے خدشات کو دور کرے گا۔

متاثر افراد کے فون نمبر ظاہر نہیں کیے گئے لیکن فیئرفیکس کا دعوی ہے کہ ان کی تعداد سینکڑوں میں تھی۔

ٹیلکو کی انتظامیہ سے رابطہ کیا گیا ہے لیکن ابھی تک کوئی جواب حاصل نہیں ہوا ہے۔

اسی بارے میں