جرمنی کے عجائب گھر سے 40 لاکھ ڈالر مالیت کا سونے کا سکہ چوری

سکہ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یہ سکہ برلن کے بوڈ میوزیم سے رات کے وقت چرایا گیا

جرمنی کے ایک عجائب گھر سے 40 لاکھ امریکی ڈالر کی مالیت کا ایک بڑا سونے کا سکہ چوری ہوگیا ہے۔

اس کینیڈین سکے کو ’بگ میپل لیف‘ کے نام بھی پکارا جاتا تھا اور اس کی مالیت دس لاکھ ڈالر ہے تاہم سو کلو گرام خالص 24 قیراط سونے کی وجہ سے آج کے دور میں اس کی مالیت کہیں زیادہ ہے۔

یہ سکہ برلن کے بوڈ میوزیم سے رات کے وقت چرایا گیا۔

تاحال یہ واضح نہیں ہے کہ چور الارم سسٹم سے کیسے بچ نکلے یا نصف میٹر چوڑے سکے کو کیسے لے اڑے۔

قیاس ہے کہ چوری کا یہ واقع مقامی وقت کے مطابق پیر کی صبح ساڑھے تین بجے پیش آیا۔

یہ سکہ اتنا بھاری ہے کہ اکیلے شخص کے لیے اس کو اٹھانا مشکل ہے اور پولیس کو شک ہے کہ چور کھڑکی کے راستے داخل ہوئے۔

عجائب گھر کے قریب ہی واقع ٹرین کی پٹریوں سے ایک سیڑھی بھی برآمد ہوئی ہے۔

پولیس کے ترجمان نے خبررساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ ’اب تک کی اطلاعات کے مطابق ہمارے خیال میں چور عجائب گھر کی عقبی جانب ریلوے ٹریکس کے قریب کھڑکی توڑ کر داخل ہوئے۔وہ عمارت میں داخل ہوئے اور سکے کی جانب گئے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یہ سکہ اتنا بھاری ہے کہ اکیلے شخص کے لیے اس کو اٹھانا مشکل ہے

ان کا کہنا تھا کہ ’سکہ عمارت کے اندر بلٹ پروف شیشے کے اندر محفوظ تھا۔‘ تاہم انھوں نے سکیورٹی سٹاف اور الارم سسٹم کے بارے میں مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں۔

یہ سکہ رائل کینیڈین منٹ میں 2007 میں تیار کیا گیا تھا۔

اس سکے کی موٹائی تین سینٹی میٹر، قطر 53 سینٹی میٹر ہے۔ اس کے ایک جانب ملکہ الزبیتھ دوئم تصویر کینیڈا کی ریاست کی سربراہ کے طور پر بنی ہوئی ہے جبکہ دوسری جانب کینیڈا کا قومی نشان میپل کا پتہ بنا ہوا ہے۔

بوڈ عجائب گھر کے سکوں والے حصے میں تقریباً پانچ لاکھ 40 ہزار اشیا موجود ہیں تاہم جرمن ذرائع ابلاغ کے مطابق صرف ’بگ میپل لیف‘ ہی چرایا گیا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں