اٹلی: وینس میں چار ’مشتبہ جہادی‘ گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ POLIZIA DI STATO
Image caption پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار کیے جانے والے چاروں افراد کے پاس اٹلی میں رہائش کا اجازت نامہ موجود تھا

اٹلی کے معروف سیاحتی شہر وینس میں چار افراد کو ایک جہادی سیل کا حصہ ہونے کے الزام می گرفتار کر لیا گیا ہے۔

گرفتار کیے جانے لوگوں میں تین مرد اور ایک نوجوان خاتون شامل ہیں۔ اطلاعات کے مطابق پولیس کوسوو سے آنے والے اس گروہ پر کئی ماہ سے نظر رکھے ہوئے تھا کیونکہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا تھا کہ وہ شام میں اسلامی شدت پسندوں سے جا ملیں گے۔

تاہم جمعرات کی صبح انھیں اس بنیاد پر گرفتار کر لیا گیا کہ وہ وینس میں لندن میں گذشتہ ہفتے ہونے والے حملے کی طرز کا ایک حملے کرنے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے۔

شہر کے مختلف مقامات پر 12 مکانات پر چھاپے مارے گئے جن میں سے 10 وینس کے تاریخی علاقے سٹی سنٹر میں موجود تھے۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ ایک مکان شہر کے معروف اوپرا ہاؤس لا فنیس کے قریب بھی تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار کیے جانے والے چاروں افراد کے پاس اٹلی میں رہائش کا اجازت نامہ موجود تھا تاہم انتہا پسندی کے خدشات کے پیشِ نظر پولیس کے ایک حصوصی دستے نے انھیں زیرِ نگرانی رکھا ہوا تھا۔ ان میں دو افراد بطور ویٹر کام کر رہے تھے۔

.اطلاعات کے مطابق نگرانی کے دوران پولیس نے لندن میں 22 مارچ کو ہونے والے حملے کے بارے میں بات چیت انٹرسیپٹ کی۔ لندن میں پارلیمان کے باہر ویسٹ منسٹر پل پر خالد مسعود نامی ایک حملہ آور نے راہگیروں پر گاڑی چڑھا دی تھی اور ایک پولیس اہلکار کو چاقو مار کر قتل کر دیا تھا۔

اٹلی کے میڈیا میں آنے والی رپورٹس کے مطابق پولیس نے ان گرفتاریوں کو عمل میں لانے کا فیصلہ اس وقت کیا جب انھیں اس بات کا اندیشہ ہوا کہ یہ گروہ وینس میں اسی کا حملے کرنے والے ہیں جن میں سیاحتی مقامات کو نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔

اسی بارے میں