سویڈن: سٹاک ہوم میں ٹرک نے لوگوں کو کچل دیا، ’چار افراد ہلاک‘

سٹاک ہوم تصویر کے کاپی رائٹ AFP

سویڈن کے دارالحکومت سٹاک ہوم میں مقامی میڈیا کے مطابق ایک ٹرک نے کم از کم چار افراد کو کچل کر ہلاک کر دیا ہے۔

میڈیا کے مطابق جمعے کی دوپہر ہونے والے اس واقعے میں متعدد افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

سویڈن کے وزیرِ اعظم سٹیفن لوفوین نے کہا کہ ہر چیز اس بات کی جنب اشارہ کر رہی ہے کہ یہ دہشت گرد حملہ تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ایک شخص کو حراست میں لیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ REUTERS
Image caption ٹرک ایک سٹور کا شیشہ توڑ کر اندر داخل ہو گیا

عینی شاہدین نے میڈیا کو بتایا ہے کہ انھوں نے ایک ٹرک کو ایک ڈیپارٹمینٹل سٹور کی کھڑکی توڑتے دیکھا۔ اس کے علاوہ انھوں کئی لوگوں کو زمین پر پڑے دیکھا ہے۔

ایک عینی شاہد لائف ارنمار نے ایس وی ٹی وی کو بتایا: 'وہاں مکمل انتشار کا عالم ہے۔ میں نے نہیں جانتا کہ کتنے لوگ زخمی ہوئے ہیں، بہت سے لوگ صدمے کی حالت میں ہیں۔'

سویڈن کی شراب بنانے والی ایک فیکٹری سیپن ڈرپس نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ان کا ایک ٹرک سامان دینے لیے صبح نکلا تھا جو کہ بعد میں چوری ہو گیا جو کہ بعد میں اس واقعہ میں استعمال ہوا۔

کمپنی کے ترجمان خبر رساں ادارے ٹی ٹی نیوز ایجسنی کو بتایا کہ 'ہمارا ڈرائیور ٹرک سے سامان نکال رہا تھا جب کوئی شخص چھلانگ لگا کر ٹرک میں داخل ہو گایا اور اسے لے کر بھاگ گیا۔

مقامی میڈیا کے مطابق ایک شخص کو گرفتار کر لیا گیا ہے لیکن پولیس نے اس بارے میں کوئی تصدیق نیں کی ہے کہ آیا کسی کو اس واقعے کی تفتیش کے لیے حراست میں لیا گیا ہے یا نہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP/ GETTY
Image caption پولیس کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا

بی بی سی کے سکیورٹی نامہ نگار فرینک گارڈنر نے سکیورٹی ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس کے علاوہ شہری کے ایک اور علاقے میں فائرنگ کی آوازیں بھی سنائی دی گئی ہیں۔

یہ واضح نہیں ہے کہ آیا ان دونوں واقعات کا آپس میں تعلق ہے۔

گذشتہ ماہ لندن میں ایک شخص نے راہگیروں کو گاڑی چڑھا کر کئی لوگوں کو ہلاک و زخمی کر ڈالا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں