ٹرمپ نے سٹیو بینن کو قومی سلامتی کونسل سے ہٹا دیا

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے سینئیر سٹریٹیجسٹ سٹیو بینن کو امریکی کی قومی سلامتی کونسل سے ہٹا دیا ہے۔

سٹیو بینن کو ہٹانے پر وائٹ ہاؤس کا کہنا کہ ان کے عہدے کو کم نہیں کیا گیا۔

ملک کا مین سٹریم میڈیا اپوزیشن جماعت ہے: سٹیو بینن

وائٹ ہاؤس کے ایک اہلکار کے مطابق قومی سلامتی کے مشیر کے عہدے پر مقرر کیے گئے مائیکل فلن پر نظر رکھنے کے لیے سٹیو بینن کو قومی سلامتی کونسل میں جگہ دی گئی تھی۔

مائیکل فلن کو رواس برس فروری میں قومی سلامتی کے مشیر کے عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا۔

امریکہ میں قومی سلامتی کونسل صدر کو قومی سلامتی اور غیر ملکی معاملات پر مشورہ دینے کا کام کرتی ہے۔

وائٹ ہاؤس نے بدھ کو صدارتی ایگزیکٹو آرڈر کا اعلان نہیں کیا، یہ صرف ایک ریگولیٹری فائلنگ کے ذریعے سامنے آیا۔

قومی سلامتی کونسل میں کیے گئے ایڈجسٹمنٹ کے بعد سی آئی اے ڈائریکٹر اور چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کے سربراہ کو دوبارہ کونسل کی سربراہ کمیٹی میں شامل کر لیا گیا ہے۔

اس سے پہلے 27 جنوری کو سٹیو بینن کو قومی سلامتی کونسل میں شامل کرنے کے ساتھ ساتھ فوج کے چيفس آف سٹاف کا درجہ کم کرنے کا اعلان کیا گیا تھا جس پر واشنگٹن کی خارجہ پالیسی اور سیکورٹی اسٹیبلشمنٹ پرکافی تنقید ہوئی تھی۔

اسی بارے میں