ہم شام پر مزید حملوں کے لیے تیار ہیں: امریکہ کی تنبیہ

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
شامی فوجی اڈے پر امریکی میزائل حملے کے مناظر

اقوام متحدہ میں امریکی سفیر نکی ہیلی کا کہنا ہے کہ امریکہ نے اس بات کو یقینی بنایا کہ شام کے صدر بشار الاسد دوبارہ کبھی کیمیائی ہتھیاروں کو استعال نہ کر سکیں۔

نکی ہیلی کا کہنا تھا کہ امریکہ نے شام کے اس فوجی اڈے کو نشانہ بنایا جس پر شبہ ہے کہ وہاں سے کیمیائی ہتھیار استعمال کیے گئے۔

امریکی سفیر نے اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل کے ایک ہنگامی اجلاس کو بتایا ’ہم مزید حملوں کے لیے تیار ہیں تاہم امید ہے کہ اس کی ضرورت نہیں پڑے گی۔'

کب کیا ہوا: شام پر امریکی حملے کی لائیو اپ ڈیٹس

سلامتی کونسل کے ہنگامی اجلاس میں روس کی امریکہ کو 'سخت نتائج' کی تنبیہ

شام پر امریکی حملہ: برطانیہ اور ترکی کی حمایت، ایران کی مذمت

شام میں کیمیائی حملہ انسانیت کی توہین ہے: ڈونلڈ ٹرمپ

نکی ہیلی کے مطابق 'یہ ہماری قومی سلامتی کے مفاد میں ہے کہ ہم کیمیائی ہتھیاروں کے پھیلاؤ کو روکیں۔‘

واضح رہے کہ امریکہ نے شام میں باغیوں کے زیرِ اثر علاقوں میں شامی فوج کی جانب سے مشتبہ کیمیائی حملے کے جواب میں جمعے کی صبح مشرقی بحیرۂ روم میں موجود اپنے بحری بیڑے سے 59 ٹام ہاک کروز میزائلوں سے شام کے ایک فضائی اڈے کو نشانہ بنایا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption روسی وزارت دفاع نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ شیرت فضائی اڈے پر امریکی میزائل حملے کے بعد شام کے فضائی دفاع کو مضبوط کیا جائے گا

دوسری جانب شام کے اتحادی ملک روس نے امریکہ پر 'دہشت گردوں' کی حوصلہ افزائی کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔

روس نے شیرت فضائی اڈے پر امریکی میزائل حملے کے بعد شام کے فضائی دفاع کو مضبوط کرنے کا وعدہ کیا ہے۔

روس کا مزید کہنا ہے کہ وہ امریکہ کے ساتھ شام میں فضائی تحفظ کے معاہدے کو معطل کر رہا ہے۔

اطلاعات کے مطابق شام کے فوج اڈے پر جمعے کی صبح ہونے والے حملے میں کم سے کم چھ افراد ہلاک ہوئے جب کہ

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ شامی فوجی اڈے سے کیے جانے والے کیمیائی ہتھیاروں کے حملے میں درجنوں شہری ہلاک ہوئے تھے۔

ادلیب کی حزب اختلاف کا کہنا ہے خان شیخون میں مبینہ زہریلی گیس کے حملے میں 33 بچوں اور 18 خواتین سمیت کم سے کم 89 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جب کہ شام نے اس کی تردید کی ہے۔

اس سے قبل امریکی وزیرِ خارجہ ریکس ٹیلرسن نے کہا تھا کہ شام کے مستقبل میں بشار الاسد کی کوئی جگہ نہیں ہے۔

انھوں نے کہا کہ شام میں منگل کو مشتبہ کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال ایک سنگین معاملہ ہے اور اس کے لیے سنجیدہ جواب کی ضرورت ہے۔