سعودی عرب کا ریاض کے مضافات میں 'تفریحی شہر' بنانے کا اعلان

سعودی عرب تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption امریکہ کی تفریحی کمپنی سکس فلیگ نے سعودی عرب میں تھیم پارک بنانے کا اعلان کیا ہے

سعودی عرب کے نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی جانب سے جاری کیے گئے ایک بیان میں اعلان کیا گیا ہے کہ ملک کے دارالحکومت ریاض کے مضافات میں ایک تفریحی شہر قائم کیا جائے گا۔

اس'شہر' کو سال 2022 میں کھولنے کا ارادہ ہے اور یہ سعودی حکومت کے 'ویژن 2030' پلان کا حصہ ہے جس کے مطابق ملک میں نوجوانوں کو ملازمت کے نئے مواقعے فراہم کیے جائیں گے اور سعودی عرب کے سخت تاثر کو کم کرنے کی کوششیں کی جائیں گی۔

سعودی عرب میں ’تبدیلی کی لہر‘

خبر رساں ادارے روئٹرز نے سعودی عرب کے سرکاری خبر رساں ادارے ایس پی اے کے حوالے سے بتایا ہے کہ یہ 'تفریحی شہر' 334 مربعہ کلو میٹر کے رقبے پر بنایا جائے گا اور اس میں کھیل، ثقافت اور تفریحی سہولیات شامل ہوں گی۔ اس کے علاوہ یہاں پر سفاری پارک اور مشہور زمانہ سِکس فلیگ کی جانب سے تھیم پارک بھی بنایا جائے گا۔

مملکت کا پبلک انویسٹمنٹ فنڈ اس منصوبے میں سرمایہ کاری کرے گا جس کی ابتدا اگلے سال ہوگی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سعودی عرب کے نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے گذشتہ سال ویژن 2030 کا اعلان کیا تھا

نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے بیان میں کہا گیا کہ 'یہ شہر ہمارے ملک کی ثقافتی پہچان بن جائے گا اور مستقبل میں ہمارے ملک کی عوام کی تفریحی، ثقافتی اور سماجی ضروریات کو پورا کرے گا۔'

امریکی تفریحی کمپنی سِکس فلیگ نے گذشتہ سال جون میں اعلان کیا تھا کہ وہ سعودی حکومت سے ملک میں ویژن 2030 کے سلسلے میں تھیم پارکس قائم کرنے کے بارے میں گفتگو کر رہی ہے۔

اس کے بعد کمپنی کے چیف ایگزیکیٹو جم ریڈ اینڈرسن نے کہا کہ ان کی کمپنی سعودی عرب میں 30 کروڑ سے 50 کروڑ کی لاگت کے تین پارک بنائے گی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں