امریکہ: یونائیٹڈ ایئر لائنز کا مسافر جھگڑالو تھا‘

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
طیارے سے مسافر کو زبردستی باہر نکالنے کی ویڈیو

یونائیٹڈ ایئر لائنز کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) کا کہنا ہے کہ ادارے کے ملازمین نے فلائٹ سے زبردستی باہر نکالے جانے والے ایک مسافر کے معاملے میں پہلے سے موجود 'طریقۂ کار' کی پیروی کی۔

یونائیٹڈ ایئر لائنز کے ملازمین کو لکھے جانے والے ایک خط میں سی ای او آسکر منوز کا کہنا تھا کہ 'جو کچھ بھی ہوا اسے دیکھ اور سن کر پریشانی ہوئی۔'

ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ مسافر ’اڑیل اور جھگڑالو تھا۔'

* ’چست پاجامے میں جہاز پر سوار نہیں ہو سکتیں‘

* دوران پرواز ہیڈ فون پھٹنے سے خاتون کا چہرہ جھلس گیا

اس مسافر کی شناخت سرکاری طور پر ظاہر نہیں کی گئی تاہم اس کی نشست کے ساتھ بیٹھے ہوئے ایک مسافر نے بی بی سی ریڈیو فائیو کو بتایا کہ اس شخص کا کہنا تھا کہ اس کا تعلق ویت نام سے ہے اور وہ گذشتہ 20 سالوں سے کنٹکی میں رہ رہا ہے۔

اس شخص کے مطابق مذکورہ شخص کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ اور اس کی بیوی ڈاکٹر ہیں۔

واضح رہے کہ یونائیٹڈ ایئر لائنز کی ایک فلائٹ سے زبردستی باہر نکالے جانے والے ایک شخص کی ویڈیو پر سوشل میڈیا میں غصہ پھیلا گیا تھا۔

ہوائی جہاز میں بنائی گئی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک شخص کو گھسيٹ كر طیارے سے باہر لے جایا جا رہا تھا۔

یونائیٹڈ ایئر لائنز کا یہ طیارہ اتوار کی شام شکاگو سے لوئسویلے جا رہا تھا۔

ایئر لائنز نے ٹویٹ کرکے واقعے پر معافی مانگی ہے اور کہا ہے کہ معاملے کی تحقیقات کی جا رہی ہے۔

ٹویٹر پر پوسٹ کی گئی پچاس سیکنڈ کی ویڈیو سولہ ہزار سے زیادہ بار شیئر کیا گیا۔

ویڈیو پوسٹ کرنے والے جائس ڈی ایسپیچ نے ٹویٹ کیا، ’یونائیٹڈ ایئر لائنز نے گنجائش سے زیادہ ٹکٹ بک کر لئے اور وہ چاہتے تھے کہ ہم چار لوگ مرضی سے ان لوگوں کے لئے سیٹ چھوڑ دیں جنہیں اگلے دن ڈیوٹی پر جانا تھا۔‘

کسی نے بھی مرضی سے سیٹ نہیں چھوڑی تو ایئر لائنز نے سیٹ خالی کرانے کے لئے خود ہی لوگوں کو چن لیا۔

انھوں نے ایک ایشیائی نژاد ڈاکٹر اور اس کی بیوی سے سیٹ خالی کرنے کے لئے کہا۔ ڈاکٹر کو بھی اگلے دن ہسپتال جانا تھا اس لیے انہوں نے بھی انکار کر دیا۔

انھوں نے لکھا،’دس منٹ بعد ڈاکٹر خون آلود چہرے کے ساتھ ہوائی جہاز میں آئے اور ایک کونے میں چپک گئے اور چلائے کہ مجھے بھی گھر ہی جانا ہے۔‘

ایک اور مسافر نے ویڈیو فیس بک پر پوسٹ کرتے ہوئے لکھا، ’یہ ویڈیو شیئر کیجیئے. ہم اس فلائٹ میں ہیں۔ یونائیٹڈ ایئر لائنز نے گنجائش سے زیادہ نشستیں بک کروا لی ہیں۔‘

انھوں نے لکھا، ’وہ لوگوں کو ہوائی جہاز سے باہر نکال رہے ہیں تاکہ ان عملے کے ارکان جگہ مل سکے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ TYLER BRIDGES/TWITTER

انھوں نے لکھا، ’یہ آدمی ایک ڈاکٹر ہے اور اسے اگلی صبح ہسپتال جانا ہے۔ وہ ہوائی جہاز سے اترنا نہیں چاہتے ہیں۔ ہم سب اس واقعہ سے شرمندہ ہیں۔‘

اس واقعہ کے بعد کئی لوگوں نے سوشل میڈیا پر ناراضی ظاہر کی۔

ایک شخص نے لکھا، ’کسی کے ساتھ اس طرح کا برتاؤ کرنا افسوسناک ہے۔ میں نے کبھی یونائیٹڈ ایئر لائنز میں ٹکٹ بک نہیں کروں گا۔‘

بہت سے لوگوں کا تبصرہ تھا کہ اس واقعے کا کوئی اور بھی پہلو ہو سکتا ہے۔

عام طور پر جب کسی فلائٹ میں گنجائش سے زیادہ ٹکٹ بک ہو جاتے ہیں تو ایئر لائن نشست چھوڑنے والے لوگوں کو تحفے واؤچر دیتی ہے۔

ایئر لائنز کے ایگزیکٹو آفیسر آسکر مونذ نے ٹویٹ کیا، ’یہ واقعہ ہم سب کے لیے افسوسناک ہے۔ میں ان مسافروں سے معافی مانگتا ہوں۔‘

انھوں نے لکھا، ’ہماری ٹیم واقعہ کا جائزہ لے رہی ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Jayse D Anspach

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں