یونائیٹڈ ایئرلائن کی جانب سے مسافر کو گھسیٹنے پر سوشل میڈیا پر طنز

امریکی فضائی کمپنی کی جانب سے ایک مسافر کو گھسیٹ کر باہر نکالنے کے معاملے پر دنیا بھر میں شدید ردِ عمل سامنے آ رہا ہے۔

ایک جانب یونائیٹڈ ایئرلائن ہدفِ تنقید ہے تو دوسری جانب ایسے امریکی جو دنیا کے سامنے اس مسافر کا ماضی لانے پر کمر بستہ ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption جارڈینیئن ایئرلائنز کی ٹویٹ

اردن کی قومی فضائی کمپنی رائل جارڈینیئن نے، جو سوشل میڈیا پر اپنے انوکھے انداز کی وجہ سے مشہور ہے، یونائیٹڈ کو براہِ راست نشانہ بناتے ہوئے ایک میم شیئر کی جس میں لکھا گیا تھا 'ہم یادہانی کروانا چاہتے ہیں کہ ہماری پروازوں پر مسافروں اور عملے کی جانب سے ڈریگز (یعنی کش لینا) سختی سے منع ہے۔'

اس کے اوپر بڑے معنی خیز انداز میں تبصرہ لکھا ہے 'ہم یہاں آپ کو متحد رکھنے کے لیے ہیں۔ اور تمباکو نوشی یعنی ڈریگنگ (جس کے معنے گھسیٹنے کے بھی ہیں) سختی سے منع ہے۔'

رائل جارڈینیئن نے بڑی مہارت سے ’ڈریگنگ‘ کا لفظ استعمال کیا اور اسے پھر اس واقعے سے جوڑا جس پر انھیں ہر جانب سے داد دی جا رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption یہ میم پی آئی اے کسی آفیشل سوشل میڈیا اکاؤنٹ سے شیئر نہیں کیا گیا۔

ایک فیس بُک پیج نے، جو کہ پی آئی اے کا نہیں ہے، پی آئی اے کے عملے کی تصویر کے ساتھ ایک تصویر شائع کی جس میں لکھا ہے کہ 'آپ ہمیں جو مرضی کہیں مگر ہم اپنے مسافروں کو دھکے دے کر باہر نہیں نکالتے'۔

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption ساؤتھ ویسٹ کے لوگو کے ساتھ یہ اشتہار کمپنی کی جانب سے شیئر نہیں کیا گیا

امریکہ ہی کی ایک اور فضائی کمپنی ساؤتھ ویسٹ کے لوگو کے ساتھ ایک میم میں لکھا گیا ہے کہ 'ہم اپنے حریفوں کو پچھاڑتے ہیں، آپ کو نہیں۔'

تاہم اس پیغام کا ساؤتھ ویسٹ کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption الامارات نے براہِ راست یونائیٹڈ کے سی ای او کو نشانہ بنایا

دبئی کی فضائی کمپنی الامارات نے اس موقعے کو غنیمت جانتے ہوئے یونائیٹڈ ایئر لائن کے سی ای او کو ہدفِ تنقید بنایا جنہوں نے ماضی میں کہا تھا کہ الامارات ایک حقیقی فضائی کمپنی نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption لوگ غصے میں آکر یونائیٹڈ ایئرلائن کے کارڈز کو کاٹ کر پھینک رہے ہیں۔

ٹوئٹر پر ایک صارف تنمے ڈیسائی نے لکھا کہ 'مجھے نہیں پتا کہ لوگ یونائیٹڈ پر اتنا آگ بگولا کیوں ہو رہے ہیں کیونکہ یہ واحد فضائی کمپنی ہے جس میں آپ کو سیٹ مل سکتی ہے، بے شک آپ نے بُکنگ نہ کی ہو۔'

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption ’ہم ہاسپیٹیلٹی میں ہاسپیٹل ڈالتے ہیں۔‘
تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption ان صاحب نے سفر کرنے کے دوران اپنی حفاظت کا خوب انتظام کیا