نیوزی لینڈ کے شمال میں طوفان نے تباہی مچا دی

نیوزی لینڈ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

نیوزی لینڈ کے کچھ علاقوں میں سائیکلون کک نامی طوفان کے نتیجے میں آنے والی شدید بارشوں اور تیز ہواؤں نے ملک کے شمالی جزیرے کو شدید متاثر کیا ہے۔

حکام نے اسے دہائیوں کا بد ترین طوفان قرار دیا ہے۔

حکام نے کورومنڈل جزیرہ نما اور بے آف پینلٹی میں شدید سیلاب، شاہراؤں کی بندش اور بجلی کی عدم فراہمی کے بعد وہاں ہنگامی حالت کا اعلان کر دیا ہے۔

کچھ ساحلی علاقوں کو خالی کروا لیا گیا ہے اور مقامی میڈیا کے مطابق 15,000 گھروں میں بجلی نہیں ہے تاہم نیوزی لینڈ کا سب سے بڑا شہر آک لینڈ اس تباہی سے محفوظ رہا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ TVNZ / Reuters

نیوزی لینڈ میں سائیکلون کک نامی طوفان مقامی وقت کے مطابق 18:30 پر بے آف پینلٹی سے ٹکرایا۔

نیوزی لینڈ ریڈیو کے مطابق طوفان کی وجہ سے ساحلی قصبے کا زیادہ تر حصہ بجلی سے محروم ہے جبکہ پورے علاقے میں درخت اور بجلی کی تاریں گریں ہوئی ہیں۔

حکام نے کورومنڈل اور تورنگا کے نشینی علاقوں کے رہائیشیوں کو فوری طور پر انخلا کرنے کا کہا ہے۔

ریڈ کراس نیوزی لینڈ کے لورین ہیز نے ٹویٹ کی ہے کہ متعدد خاندان 110 بستروں پر مشتمل سینٹر پہنچے ہیں۔

نیوزی لینڈ ریڈیو کا کہنا ہے کہ طوفان کی وجہ سے مشرقی علاقے ہاکس میں 9,000 افراد کے پاس بجلی نہیں ہے۔

نیوزی لینڈ کے محکمۂ موسمیات کے مطابق اس طوفان کو ایکسٹرا ٹراپیکل سائیکلون کی درجہ بندی دی گئی ہے۔

حکام کے مطابق علاقے میں سکولوں اور کاروباری دفاتر کو وقت سے پہلے بند کر دیا گیا جب کہ متاثرہ علاقوں کے رہائشیوں سے کہا گیا ہے کہ وہ ہنگامی اشیا کو سٹاک کر لیں۔

نیوزی لینڈ میں پروازوں کو ملتوی یا منسوخ کر دیا گیا ہے جب کہ قومی فضائی کمپنی نے تورنگا ایئرپورٹ سے پروازوں کا آپریشن معطل کر دیا ہے۔