شارک کے حملے میں نوجوان لڑکی کی ہلاکت

شارک تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption شارک سے متنبہ کرنے کے لیے یہ بورڈ لگایا جاتا ہے

مغربی آسٹریلیا میں ایک 17 سالہ لڑکی سرفنگ کے دوران شارک کے حملے میں ہلاک ہو گئی ہے۔

پولیس کے مطابق پیر کو شام چار بجے جب لڑکی کو ان کے والد نے سمندر سے نکالا تو وہ شدید طور پر زخمی تھی اوربعد میں ہسپتال میں ان کی موت ہو گئی۔

٭ آسٹریلیا: 'شارک کے حملے' سے 60 سالہ خاتون ہلاک

٭ جب 70 شارک مچھلیاں آپ کی کشتی کو گھیر لیتی ہیں

لڑکی کے ساتھ ان کی والدہ اور دو بہن بھائی بھی موجود تھے۔

یہ لوگ ایسپرانس کے پاس معروف سرفنگ کی جگہ پر تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

خیال رہے کہ گذشتہ ایک سال میں مغربی آسٹریلیا میں شارک کا یہ تیسرا حملہ ہے جس میں لوگوں کی موت ہوگئی ہے۔

اسی علاقے میں آخری بار شارک کا حملہ سنہ 2014 میں ہوا تھا جس میں ایک شخص کو اپنے بازوؤں سے ہاتھ دھونا پڑا تھا۔

ایک پیشہ ور ماہی گیر نیول مانسٹیڈ نے کہا کہ اب وہ وہاں سرفنگ نہیں کریں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ 9NEWS.COM.AU
Image caption ہسپتال میں لڑکی کی موت ہو گئی

ویسٹ آسٹریلین نامی اخبار کو انھوں نے بتایا کہ اسی جگہ پر اس طرح کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔ ’اس میں میرا بیٹا بھی شامل ہو سکتا تھا۔‘

بیچ کو کم از کم 48 گھنٹوں کے لیے بند کر دیا گیا ہے اور اس دوران حکام اس واقعے کی جانچ کر رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں