دمشق: ’اسرائیل کا حزب اللہ کے اسلحہ ڈپو پر میزائل حملہ‘

دمشق ہوائی اڈہ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

شام کے ریاستی میڈیا کا کہنا ہے کہ اسرائیل نے دمشق کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے قریب واقع فوجی اڈے پر اسرائیل نے میزائل حملہ کیا ہے۔

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی صنعا نیوز کا کہنا ہے کہ اسرائیل کے میزائل حملے میں فیول ٹینک اور ویئر ہاؤس کو نقصان پہنچا ہے۔

تاہم حکومت مخالف باغیوں کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اسرائیلی میزائل حملے میں اس فوجی اڈے میں واقع حزب اللہ کا اسلحہ ڈپو تباہ ہوا ہے۔

شام میں پناہ گزینوں کی بسوں پر بم حملہ، درجنوں افراد ہلاک

شام: دمشق میں دو بم دھماکوں میں کم از کم '40 عراقی ہلاک'

٭ہم شام پر مزید حملوں کے لیے تیار ہیں: امریکہ

دوسری جانب اسرائیلی انٹیلی جنس کے وزیر اسرائیل کاٹز نے کہا کہ دمشق کے قریب ہونے والا حملہ اسلحے کی ترسیل روکنے کے لیے 'اسرائیل کی حکمتِ عملی سے مطابقت رکھتا ہے۔'

وزیر نے آرمی ریڈیو سے بات کرتے ہوئے اسرائیل کے اس حملے میں ملوث ہونے کی تصدیق نہیں کی تاہم ان کا یہ کہنا تھا کہ اسرائیل کو جب ضرورت ہو گی وہ کارروائی کا حق محفوظ رکھتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

اس سے قبل برطانیہ میں قائم انسانی حقوق کی تنظیم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کا کہنا ہے کہ شام کے دارالحکومت دمشق کے ہوائی اڈے کے قریب ایک زور دار دھماکہ ہوا ہے۔

تنظیم کے سربراہ رمی عبدالرحمان کا کہنا ہے کہ یہ 'انتہائی زور دار دھماکہ تھا جو دمشق میں سنا جا سکتا ہے'۔

اطلاعات کے مطابق دھماکے کے بعد جائے وقوع پر آگ لگ گئی تاہم ابھی تک کسی نقصان کی اطلاع نہیں ہے۔

لبنان کی شیعہ عسکریت پسند تنظیم حزب اللہ کے المنار ٹی وی کے مطابق یہ دھماکہ اسرائیلی فضائیہ کی کارروائی ہو سکتی ہے۔

المنار ٹی وی کے مطابق اس دھماکے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں