پوپ فرانسس کا بین المذاہب ہم آہنگی کے لیے مصر کا دورہ

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption پوپ فرانسس اپنے دورے کے دوران مصری صدر سے ملاقات کریں گے اور جامعہ الاظہر میں امن کے حوالے سے تقریر بھی کریں گے۔

کیتھولک عیسائیوں کے روحانی پیشوا پوپ فرانسس جمعے کو مصر کا ایک مختصر دورہ کر رہے ہیں جس کا مقصد مسلم دنیا سے تعلقات میں بہتری لانا ہے۔

پوپ فرانسس کا یہ دورہ ایک ایسے وقت پر کیا جا رہا ہے ہے جب مشرق وسطیٰ میں عیسائی برادری کو مشکلات کا سامنا ہے خصوصاً مصر میں قبطی عیسائی برادری کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

اس ماہ کے آغاز پر شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ نے دو قبطی گرجا گھروں میں ہونے والے دھماکوں کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ پام سنڈے کے موقعے پر شہر طنطا میں دو قبطی گرجا گھروں میں دھماکوں میں کم از کم 36 افراد ہلاک ہو گئے۔

پوپ فرانسس اپنے دورے کے دوران مصری صدر سے ملاقات کریں گے اور جامعہ الاظہر میں امن کے حوالے سے تقریر بھی کریں گے۔

وہ اپنے قبطی ہم منصب توادروس دوئم سے اظہارِ یکجہتی کے لیے ان کے ساتھ ایک ایسے گرجا گھر کا دورہ کریں گے جو کہ دسمبر میں نشانہ بنایا گیا تھا۔

پوپ فرانسس نے مسلم دنیا کے ساتھ تعلقات میں بہتری لانے کے لیے کافی کوششیں کی ہیں۔ یاد رہے کہ ویٹیکین اور مسلم دنیا کے درمیان تعلقات اس وقت کشیدہ ہوگئے تھے جب 2006 میں اس وقت کے پوپ بینیڈکٹ نے بظاہر اسلام کو دہشتگردی سے منسلک کر دیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں