یورپی یونین میں اصلاحات نہ ہوئیں تو 'فریکزٹ' ہو سکتا ہے: فرانسیسی صدارتی امیدوار میکروں

میکروں تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption امانوئل میکروں کو انتخابی جائزوں میں اپنی حریف لے پین پر 20 پوائنٹ کی سبقت حاصل ہے

فرانسیسی صدارتی انتخاب میں صفِ اول کے امیدوار امانوئل میکروں نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ اگر یورپی یونین میں اصلاحات نہ کی گئیں تو اسے فرانس کے انخلا 'فریکزٹ' کا سامنا کر پڑ سکتا ہے۔

یورپی یونین کے حامی اور معتدل نظریات رکھنے والے میکروں اور ان کی کٹر دائیں بازو کی حریف مرین لا پین اپنے اپنے حق میں انتخابی مہم چلا رہے ہیں۔

آئندہ اتوار کو فرانسیسی ووٹر فیصلہ کریں گے کہ ان دونوں میں سے فرانس کا اگلا صدر کون ہو گا۔

٭ میکروں فرانس کے سب سے کم عمر صدر بننے کے لیے پرامید

لا پین نے ملک میں موجود یورپی یونین مخالف جذبات کا فائدہ اٹھایا ہے اور وعدہ کیا ہے کہ وہ اقتدار میں آ کر برطانیہ کی طرح فرانس کی رکنیت کے معاملے پر ریفرینڈم کروائیں گی۔

انھیں دیہاتی اور سابقہ صعنتی علاقوں میں لوگوں کی حمایت حاصل ہے اور انھوں نے عہد کیا ہے کہ وہ صدر بن کر فرانس کی سرحدوں کا کنٹرول یورپی یونین سے لے لیں گی اور تارکینِ وطن کی آمد پر پابندی لگا دیں گی۔

امانوئل میکروں نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا: 'میں یورپ کے حق میں ہوں۔ میں نے انتخابی مہم کے دوران یورپ کے تصور اور یورپی پالیسیوں کی حمایت کی ہے کیوں کہ میں سمجھتا ہوں کہ یہ فرانسیسی عوام اور عالمگیریت کے دوران میں ہمارے ملک کے مقام کے لیے انتہائی ضروری ہے۔

'تاہم اس کے ساتھ ساتھ ہمیں اس صورتِ حال کا بھی مقابلہ کرنا ہے، لوگوں کی بات بھی سننی ہے اور یہ بھی سننا ہے کہ وہ سخت غصے میں ہیں اور یورپی یونین کی عدم کارکردگی زیادہ دیر نہیں چل سکتی۔'

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption لا پین کو ایسے لوگوں کی حمایت حاصل ہے جو یورپی یونین سے ناخوش ہیں

انھوں نے مزید کہا: 'اس لیے میں سمجھتا ہوں کہ میرا مینڈیٹ یہ ہو گا کہ میں ایک دن بعد ہی یورپی یونین اور یورپی پروجیکٹ میں اصلاحات کے لیے کام کروں۔'

میکروں نے کہا کہ اگر وہ یورپی یونین کو ایسے ہی چلنے دیں تو یہ 'دغابازی' کے مترادف ہو گا۔

'میں ایسا نہیں کرنا چاہتا۔ کیوں کہ پھر ہمیں فریکزٹ کا سامنا کرنا پڑے گا۔'

میکروں کو انتخابی جائزوں میں 20 پوائنٹ کی سبقت حاصل ہے۔ انھوں نے اور لا پین نے اتوار کا دن اپنی انتخابی مہم چلاتے ہوئے گزارا۔

میکروں نے پیرس کی ہولوکاسٹ یادگار کا دورہ کیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں