جیل سے بھاگنے کے لیے عورت بنا پھر بھی پکڑا گیا

تصویر کے کاپی رائٹ HONDURAS POLICE
Image caption عورت کا بھیس بدلتے ہوئے انہوں نے چہرے پر لالی اور ناخنوں پر گلابی رنگ کی پالش تک لگائی تھی

ہونڈوراس میں ایک سزا یافتہ قاتل نے ایک عورت کا بھیس بدل کر جیل سے بھاگنے کی کوشش کی تاہم وہ پکڑا گیا۔ اور جیل حکام کا کہنا ہے کہ اسے اب سخت سزا کا سامنا ہے۔

پچپن سالہ فرانسِسکو ہیریرا آرگیئٹہ نے ایک لمبی سکرٹ، سہنرے رنگ کے بالوں کی وِگ، کالا چشمہ اور نقلی پستان لگا کر جیل سے بھاگنے کی کوشش کی۔ انہوں نے ان لوگوں کے ساتھ چلتے چلتے باہر جانے کی کوشش کی جو جیل میں قید اپنے پیاروں سے ملنے جیل آئے تھے۔ تاہم وہ تب پکڑے گئے جب ان کے چلنے کے الگ انداز سے پہرےداروں کو ان پر شک ہوا۔ بعد میں یہ بھی سامنے آیا کہ ان کی آواز مردوں والی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ HONDURAS POLICE
Image caption ان کی آواز سے بھی گارڈز کو شک ہوا۔

آرگیئٹہ ایک گینگ کے لیڈر ہیں اور وہ ڈان چیکو کے نام سے بھی جانے جاتے ہیں۔ انہیں ستمبر دو ہزار پندرہ میں قتل اور ہتھیاروں کے غیر قانونی استعمال کے لیے جیل ہوئی تھی۔ انہیں اب جیل سے بھاگنے کی کوشش کے لیے مزید سزا کا سامنا ہے۔ حکام نے یہ بھی کہا ہے کہ انہیں ملک کی خطرناک ترین جیل ایل پوزو بھی منتقل کیا جا سکتا ہے۔

عورت کا بھیس بدلتے ہوئے انہوں نے چہرے پر لالی اور ناخنوں پر گلابی رنگ کی پالش تک لگائی تھی۔

پولیس کے ترجمان نے بتایا کہ وہ میک اپ سے اپنا مرد ہونا چھپا نہیں پائے۔

ہونڈوراس نے حالیہ دنوں میں پرتشدد جرائم کے خلاف مہم تیز کر دی ہے۔ نیشنل یونیورسٹی کے مطابق دو ہزار گیارہ میں ملک میں قتل کی شرح ہر ایک لاکھ افراد کے لیے چھیاسی اعشاریہ پانچ افراد تھی۔ جو کہ دو ہزار پندرہ تک گر کر ساٹھ افراد ہو گئی ہے۔