سکاٹ لینڈ سے روس کا سفر: ’رشوت کی قیمت، ایک مصافحہ دو سگریٹ‘

سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker

گاڑی پر سکاٹ لینڈ سے روس جانے میں کتنی دیر لگتی ہے؟ فوٹوگرافر جیمز پارکر نے اپنا کیمرا اٹھایا اور اپنی کلاسک گاڑی مورس مائنر میں بیٹھ کر تقریباً 10 ہزار میل کا سفر طے کیا اور ساتھ ساتھ چندے کے لیے رقم بھی جمع کی۔

19 ممالک، تین صحرا اور دو دریاؤں سے گزر کر جیمز اپنی منزل تک 53 دن پر محیط سفر طے کر کے پہنچے۔

سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker

اس سفر کے دوران ان کی خصوصی توجہ راستے میں ملنے والے مردوں پر تھی جن سے مل کر وہ یہ جاننا چاہتے تھے کہ مغرب سے مشرق کے سفر کے دوران صنفی تفریق کس طرح بدلتی ہے۔

انھوں نے بتایا کہ سفر کے دوران 'مجھے اس بات کا احساس ہوا کہ میں ان لوگوں کو، ان چیزوں کو، اس صورتحال کی تصاویر بنا رہا تھا جہاں مجھے خود اپنی پہچان اور موجودگی محسوس ہو رہی تھی۔'

سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker

اس وجہ سے جیمز کی زیادہ تر تصاویر اپنے جیسے نوجوانوں کی تھی۔ انھوں نے ان نوجوانوں سے دوستیاں کیں اور ان دوستیوں کا اصل سبب ان نوجوانوں کی گاڑیاں اور سائکلیں تھیں۔ 'سائیکل ایک ایسی عالمگیر چیز ہے جسے استعمال کرنے کے لیے آپ کو کسی زبان سیکھنے کی ضرورت نہیں ہوتی۔'

سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker

اس کے علاوہ جیمز کو اپنی گاڑی کی وجہ سے بھی کافی فوائد ملے۔

'ہم کہیں بھی سستانے کے لیے رکتے، فوراً ہمیں کوئی نہ کوئی کافی پلانے کے لیے مل جاتا۔ دس میکینک پہنچ جاتے، گاڑی کا بونٹ کھول لیتے اور وہاں ایسا لگتا کہ ہم فارمولا ون کے گیراج میں ہیں، بس بڑی توند والوں کے ساتھ ۔۔۔ '

سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker

اس سفر سے جیمز کی بہت سی اچھی یادیں وابستہ ہیں لیکن ان کو بہت جلد احساس ہوا کہ دن میں دس گھنٹہ گاڑی چلانا بہت تھکن آور ہو سکتا ہے۔

سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker

اس کے علاوہ دوسرا مسئلہ جو ان کو درپیش آیا وہ کہ کس طرح انھیں بیابان علاقوں میں گاڑی کے لیے پیٹرول اور کھانے کا سامان ملے گا۔

کئی جگہوں پر انھیں پولیس نے روکا لیکن جیمز نے کہا کہ 'سفر کے دوران کم سے کم رشوت جو میں نے دی وہ ایک مصافحہ اور دو سگریٹ تھے۔'

سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker

کئی جگہوں پر انھیں پولیس نے روکا لیکن جیمز نے کہا کہ 'سفر کے دوران کم سے کم رشوت جو میں نے دی وہ ایک مصافحہ اور دو سگریٹ تھے۔'

سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker
سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker
سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker
سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker
سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker
سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker
سفر تصویر کے کاپی رائٹ James Parker

لیکن ان تمام مشکلات کے باوجود ان کا کہنا تھا کہ 'گوبی صحرا میں رات بسر کرنا، استنبول میں فوج کے تختہ الٹنے کی کوشش کے دوران راستہ بھٹک جانا، کاپاڈوچیا میں علی الصبح غبارے میں سفر کرنا بہت یاد گار تھا۔'

لیکن پورے سفرکی سب سے خاص بات؟ تمام راستے جیمز کی گاڑی ایک دفعہ بھی پنکچر نہیں ہوئی۔

* تمام تصاویر جیمز پارکر نے لی ہیں۔