ٹائمز سکوائر میں گاڑی فٹ پاتھ پر چڑھ گئی، ایک خاتون ہلاک متعدد زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

امریکی شہر نیو یارک میں فائر ڈیپارٹمنٹ کا کہنا ہے کہ ٹائمز سکوئر میں ایک تیزی رفتار گاڑی وہاں پیدل چلنے والے افراد پر چڑھ گئی جس کے نتیجے میں ایک خاتون ہلاک اور 23 دیگر افراد زخمی ہوئے ہیں۔

چھبیس سالہ ڈرائیور امریکی شہری ہے اور امریکی آرمڈ سروسز کا رکن رہ چکا ہے۔ اطلاعات کے مطابق اس شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

نیو یارک کے میئر بل ڈی بلیسو کا کہنا ہے کہ ’ایسے کوئی اشارہ نہیں ملا ہے جس سے اس واقعے کو دہشت گرد کارروائی کہا جا سکے۔‘

سرخ رنگ کی ہونڈا گاڑی فٹ پاتھ پر چڑھ گئی اور تین بلاک عبور کرنے کے بعد الٹ گئی۔

تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ گاڑی آدھی الٹی ہوئی ہے اور اس کے بونٹ سے شعلے اور دھواں اٹھ رہا ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل لندن، برلن اور فرانسیسی شہر نیس میں گاڑیوں سے کچلنے کے وقعات پیش آ چکے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

وفاقی تحقیقاتی ادارہ ایف بی آئی اس واقعے کی تحقیقات کر رہا ہے تاہم حکام کا کہنا ہے کہ فی الحال اس واقعے کا دہشت گردی سے کوئی تعلق نہیں ملا ہے۔

نیو یارک کے محکمہ پولیس نے ٹوئٹر پر کہا ہے کہ ’یہ ایک مختلف واقعہ لگتا ہے۔‘

شہر کی انتظامیہ کہ مطابق وہ حفاظتی اقدامات کے طور پر شہر کے اہم مقامات پر اینٹی ٹیرر یونٹ کے اضافی اہلکار تعینات کر رہے ہیں۔

نیو یارک ٹائمز سے بات کرتے ہوئے ایک عینی شاہد 24 سالہ ڈانہے کا کہنا تھا کہ ’یہ گاڑی انتہائی تیز رفتاری کے ساتھ جا رہی تھی اور مجھے ایسا لگا کہ جیسے وہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو کچلنا چاہتا تھا۔‘

’لوگ چھلانگیں لگا کر خود کو بچانے کی کوشش کر رہے تھے۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں