جکارتہ میں ہم جنس پرستوں کی پارٹی، 141 گرفتار

indonesia تصویر کے کاپی رائٹ AFP

انڈونیشیا کی پولیس کا کہنا ہے کہ دارالحکومت جکارتہ سے اتوار کی رات 'ہم جنس پرستوں' کی ایک پارٹی سے 141 مردوں کو گرفتار کیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس پارٹی کے شرکا، جن میں برطانوی اور سنگاپور سہ تعلق رکھنے والے مرد بھی شامل ہیں، نے اس پارٹی میں شرکت کے لیے 14 ڈالر دیے تھے۔

انڈونیشیا میں ہم جنس پرستوں کے خلاف حال ہی میں کارروائیاں تیز کر دی گئی ہیں۔

انڈونیشیا کے قوانین میں ہم جنس پرستی غیر قانونی نہیں ہے سوائے آچے صوبے میں۔

جکارتہ پولیس کے ترجمان کا کہنا ہے کہ جس افراد کو حراست میں لیا گیا ہے ان میں سے کچھ افراد پر انسداد فحاشی قانون کے تحت مقدمہ درج کیا جائے گا۔

گذشتہ ہفتے دو مردوں کو آچے میں کوڑوں کی سزا سنائی گئی تھی۔ ان پر ہم جنس پرستی کا جرم ثابت ہوا تھا۔ آچے میں ہم جنس پرستی کے خلاف قانون 2014 میں لاگو کیا گیا تھا اور یہ پہلی بار ہے کہ اس قانون کے تحت کسی کو سزا سنائی گئی ہو۔

متعلقہ عنوانات