’اسرائیل اور فلسطین میں امن کے لیے ہر ممکن کوشش کروں گا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption صدر ٹرمپ کے مشرقِ وسطیٰ کے دورے کا آج آخری دن ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ اسرائیلیوں اور فلسطینیوں کے درمیان امن قائم کرنے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔

فلسطینی صدر محمود عباس سے ملاقات کے موقعے پر صدر ٹرمپ نے کہا کہ وہ اس بات کے شکر گزار ہیں کہ صدر عباس نے دہشتگردی کے خلاف ضروری اقدامات اٹھانے کا عہد کیا ہے۔

مسلمان ملک انتہاپسندوں کا خاتمہ کریں: ٹرمپ

ایران کے لیے ٹرمپ کا موقف سخت کیوں؟

اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان گذشتہ تین سال سے مذاکرات معطل ہیں اور صدر ٹرمپ کا ماننا ہے کہ اس معاملے کو سلجھانا انتہائی مشکل ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ بیت اللحم میں صدر عباس سے ملاقات ’امید‘ کی فضا میں ہوئی۔

صدر ٹرمپ نے کہا کہ ’میں اسرائیلیوں اور فلسطینیوں کے درمیان امن قائم کرنے کی کوششیں کرنے کے پرعزم ہیں اور میرا ارادہ ہے کہ میں اس ہدف کو حاصل کرنے کے لیے ہر ممکن کوشش کروں۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ صدر عباس نے اس بات کی یاد دہانی کروائی ہے کہ وہ اس ہدف کو حاصل کرنے کے لیے نیک نیتی سے کام کریں گے اور صدر ٹرمپ کو اسرائیلی وزیراعظم نے بھی اسی بات کا یقین دلایا۔

صدر ٹرمپ کے مشرقِ وسطیٰ کے دورے کا آج آخری دن ہے۔ صدر ٹرمپ کے دورے کے خلاف فلسطینیوں نے غزہ پٹی اور غربِ اردن دونوں میں مظاہرے کیے ہیں۔

پیر کو اسرائیلی صدر سے ملاقات کے موقعے پر صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ وہ امریکہ اور اسرائیل کے درمیان اٹوٹ رشتے کی تائید کرنے آئے ہیں اور یہ خطے میں امن و استحکام قائم کرنے کا نایاب موقع ہے۔

اتوار کے روز صدر ٹرمپ سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض سے تیل ابیب آئے تھے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سعودی عرب کے دورے کے موقع پر تقریر کرتے ہوئے مسلم دنیا پر زور دیا کہ وہ انتہا پسندی سے نمٹنے کے لیے آگے بڑھیں۔ انھوں نے کہا کہ شدت پسندی کے خلاف جنگ عقائد کے خلاف جنگ نہیں ہے بلکہ یہ 'نیکی اور بدی' کی جنگ ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ جنھوں نے مسند صدارت پر بیٹھنے کے بعد اپنے پہلے عالمی دورے کے لیے سعودی عرب کو چنا، ریاض میں عرب اسلامک امریکن سربراہی اجلاس میں خطاب کر رہے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں