ٹرمپ کا شاہ سلمان کو فون، خلیجی یکجہتی پر زور

ٹرمپ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption امریکی صدر نے گذشتہ ماہ قطر کے امیر سے ملاقات کی تھی تاہم ایک روز قبل انھوں نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں قطر پر الزام عائد کیا کہ وہ دہشت گردی کی معاونت کر رہا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سعودی عرب کے بادشاہ شاہ سلمان پر زور دیا ہے کہ قطر پر شدت پسندوں کی حمایت کے الزام کی وجہ سے پیدا ہونے والے تنازعے پر خلیجی ممالک میں یکجہتی پیدا کرے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق ایک امریکی اہکار نے بتایا کہ 'ان کا پیغام تھا کہ ہمیں خطے میں انتہاپسندی اور دہشت گردوں کی مالی معاونت کے خلاف جنگ کے لیے اتحاد کی ضرورت ہے۔'

قطر کے خلاف اقدامات سعودی عرب کے دورے کا نتیجہ: ٹرمپ

خیال رہے کہ اس سے قبل امریکی صدر نے کہا تھا کہ سعودی عرب کی جانب سے قطر کو تنہا کرنے کا اقدام 'دہشت گردی کے خاتمے کا آغاز' ہو سکتا ہے۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دعویٰ بھی کیا ہے کہ ان کی وجہ سے ہی خطے میں دہشت گردی کو فروغ دینے کے الزام میں قطر پر اس کے ہمسایہ ممالک نے دباؤ ڈالنا شروع کیا ہے۔

پیر کوسعودی عرب، مصر، متحدہ عرب امارات، بحرین، لیبیا اور یمن نے قطر پر خطے کو غیر مستحکم کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے اس سے سفارتی تعلقات منقطع کرنے کا اعلان کیا ہے۔

قطر نے سعودی عرب اور مصر سمیت چھ عرب ممالک کی جانب سے اس کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کرنے کے اعلان کے بعد سفارتی تنازع کو ختم کرنے کے لیے مذاکرات پر زور دیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حماس فلسطینی مسلمان گروپ ہے جس کے جھنڈے کا رنگ سبز ہے۔

کویت کے امیر اس تنازعے کے خاتمے کے لیے ثالث کا کردار ادا کر رہے ہیں جبکہ ترکی نے بھی قطر کو مدد کرنے کی پیشکش کی ہے اور ترک صدر نے کہا ہے کہ کسی کو تنہا کرنے اور پابندیاں عائد کرنے سے بحران حل نہیں ہوگا۔

اس تنازعے کی وجہ سے تیل کی قیمتوں، آمدورفت اور قطر میں اشیا کی قیمتوں پر اثر پڑا ہے۔

سعودی بادشاہ سے رابطہ کر کے امریکی صدر نے کہا کہ ’یہ اہم ہے کہ خلیج خطے کے امن اور سکیورٹی کے لیے متحد ہو۔‘

دوسری جانب پینٹاگون نے ایک بیان میں مشرقِ وسطیٰ میں سب سے بڑے امریکی فضائی اڈے کی میزبانی کرنے کے لیےقطر کا شکریہ ادا کیا ہے۔

یاد رہے کہ سعودی عرب کے وزیرِ خارجہ عادل الجبیر نے قطری حکومت سے رابطہ کر کے ان سے کہا تھا کہ اگر وہ خلیج میں تنہائی سے بچنا چاہتا ہے تو فلطسین میں حماس اور مصر میں اخوان المسلمین س رابطے ختم کرے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں