موزمبیق: گنجے مردوں کو ہوشیار رہنے کی تلقین

گنجے مرد تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

افریقی ملک موزمبیق میں پولیس نےگنجے مردوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ توہم پرستوں کے حملوں سے ہوشیار رہیں۔

موزمبیق میں حال دنوں میں پولیس نے دو افراد کو گرفتار کیا ہے جنھوں نے مبینہ طور پر تین گنجے مردوں کو ہلاک کیا ہے۔

موزمبیق میں کچھ توہم پرستوں کا اعتقاد ہے کہ گنجے مردوں کے سر میں سونا ہوتا ہے اور گنجے مردوں کے اعضا سے بنی ہوئی دوا کھانے سے وہ بھی امیر ہو سکتے ہیں۔

پولیس نے ملک کے مرکزی ضلع ملانگے میں دو افراد کو گرفتار کیا ہے جہاں تین گنجے مردوں کو ہلاک کر دیا تھا۔

زمبیزیا صوبے کے پولیس سربراہ افانسو ڈائس نے ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ کچھ لوگوں کا اعتقاد ہے کہ گنجے مردوں کے سر میں سونا ہوتا ہے اور وہ امیر ہوتے ہیں۔

علاقائی سکیورٹی ترجمان میگویل سیٹانو نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ ہلاک کیے گئے گنجے افراد میں سے ایک کا سر تن سے جدا کر لیا گیا اور اس کے جسم کے اعضا کو نکال لیا گیا۔

ترجمان نے کہا کہ ان اعضا کو عطائی ایسے کاہگوں کے لیے تیار کی جانے والی دوا میں استعمال کرتے ہیں جو دولت کے متلاشی ہوتے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں