کیا برطانیہ میں مشتبہ شدت پسندوں کی کوئی فہرست ہے، اگر ہے تو پولیس اس کا کیا کرتی ہے؟

شدت پسندی

برطانیہ میں شدت پسندی کے حالیہ واقعات کے بعد لوگ مشتبہ افراد کی فہرست کے بارے میں بات کر رہے ہیں، لیکن کیا ایسی کوئی فہرست وجود رکھتی ہے؟

رائل یونائیٹڈ سروسز انسٹیٹیوٹ کی مارگریٹ گلمور نے اس کی وضاحت کرتے ہوئے بتایا کہ ’فہرستیں کئی طرح کی ہوتی ہیں‘۔

’رویوں کی فہرست کسی کو بھی اور سب کو متاثر کر سکتی ہے۔‘ ان کا کہنا ہے کہ رویوں کی فہرست کے مطابق ان رویوں کی نگرانی کی جاتی ہے جو مشتبہ دکھائی دیں۔

’مثال کے طور پر ایک وقت ایسا تھا جب نوجوان افراد شام جار رہے تھے تو ان کی نگرانی کی جاتی تھی۔ پولیس کو انتہائی تشویش لاحق تھی کیونکہ نوجوانوں کو لگتا تھا کہ اگر وہ شام جا کر شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے لیے کام کریں تو ان کی زندگی بہتر ہو جائے گی۔

’لہذا جو کوئی نوجوان بھی ترکی کے راستے سفر کرتا، تو استنبول جانے والی پروازوں پر تنہا سفر کرنے والوں کو روک لیا جاتا تھا۔‘

لیکن مخصوص ناموں کی بھی ایک فہرست ہے

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

مارگریٹ کا کہنا ہے کہ یہ فہرست بھی دو حصوں میں تقسیم ہے۔

’اس میں شدت پسندوں کے نام ہیں اور ہمیں کہا گیا ہے کہ ان میں سے 20 ہزار سے زائد برطانیہ میں ہیں لیکن ان کی ہر وقت نگرانی نہیں کی جاتی۔ اگر وہ معمول سے ہٹ کر کچھ کریں، اگر وہ جگہ تبدیل کریں، الگ الگ برتاؤ کریں اور کوئی جرم کریں تو پھر ان کی نگرانی بڑھا دی جاتی ہے۔‘

ایم آئی فائیو کت تشویش

مارگریٹ کے مطابق اس فہرست میں تقریباً 3000 نام موجود ہیں اور ایم آئی فائیو کو ان افراد کے بارے میں بہت تشویش رہتی ہے۔ ’ہم جانتے ہیں کہ یہ لوگ ہر وقت مسلسل نگرانی میں رہتے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

’ہر کسی کی اپنی فہرست ہے‘

’برطانیہ کی اپنی ہی فہرست ہے جن کا وہ دیگر ممالک میں بااعتماد لوگوں کے ساتھ تبادلہ کرتا ہے۔‘

مارگریٹ کا کہنا ہے کہ یہ اس لیے ہے تاکہ ناموں کے درمیان تعلق تلاش کیا جائے۔ ’انھیں ایک نیٹ ورک کی تلاش ہے۔ وہ ناموں کا تبادلہ کرتے ہیں اور دوسرے ممالک سے پوچھتے ہیں کہ کیا ان کی فہرست میں ایسا کچھ ہے؟‘

تاہم ان کا مزید کہنا تھا ’اپنی اپنی فہرستوں کے باوجود یورپی اور بین الاقوامی فہرستیں الگ ہیں۔‘

اگر آپ فہرست پر موجود ہیں تو کیا ہوگا؟

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

مارگریٹ کے بقول: ’سکیورٹی حکام کے پاس ان لوگوں کی فہرست موجود ہے جو ان کے خیال میں دولت اسلامیہ کے ساتھ کام کرنے کے لیے شام گئے تھے۔ جب وہ برطانوی پاسپورٹ پر واپس آتے ہیں تو انھیں روک لیا جاتا ہے۔ ان سے بات چیت کی جاتی ہے، پوچھا جاتا ہے کہ انھیں کوئی ندامت ہے اور کیا وہ روک تھام سکیم کا حصہ بننے چاہیں گے۔‘

فہرست پر موجود لوگوں کو گرفتار کیوں نہیں کیا جاتا؟

مارگریٹ کا کہنا ہے کہ بعض اوقات ایسا ہی کیا جاتا ہے۔

’اگر انھیں معلوم ہو کہ کچھ لوگ ہیں جن کے نام فہرست میں بھی شامل ہیں اور وہ کچھ بڑا کرنے والے ہیں تو ممکنہ طور پر انھیں گرفتار کر لیا جاتا ہے۔‘

مارگریٹ کا یہ بھی کہنا ہے کہ ’اگر آپ کے پاس شواہد نہیں تو آپ مقدمہ نہیں چلا سکتے۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں