قطر کو جب تک ضرورت ہے خوراک بھیجیں گے: ایران

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایئر لائن کے ترجمان شاہ رخ یوش آبادی کا کہنا ہے کہ 'ان طیاروں میں پھل اور سبزیوں جیسے جلدی استعمال کرنے والی اشیا ہیں: فائل فوٹو

ایران کی قومی ایئر لائن کا کہنا ہے کہ حکومت نے قطر میں خوراک کی قلت کے پیشِ نظر کھانے سے لدے پانچ طیارے قطر روانہ کیے ہیں۔

ایئر لائن کے ترجمان شاہ رخ یوش آبادی کا کہنا ہے کہ ’ان طیاروں میں پھل اور سبزیوں جیسے جلدی استعمال کرنے والی اشیا ہیں اور ہر طیارے پر 90 ٹن خوراک ہے۔ ان کے علاوہ آج ایک اور طیارہ روانہ کیا جائے گا۔‘

قطر کے ساتھ کشیدگی کی چار وجوہات

لندن میں ملکہ سے زیادہ جائیداد قطر کی ہے

قطر کے خلاف اقدامات سعودی عرب کے دورے کا نتیجہ: ٹرمپ

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم تب تک یہ رسد جاری رکھیں گے جب تک قطر میں اس کی مانگ ہے۔‘

تاہم انھوں نے یہ واضح نہیں کیا کہ یہ خوراک بیچی گئی ہے یا پھر امداد کی مد میں دی گئی ہے۔

اس کے علاوہ تسنیم نیوز ایجنسی کے مطابق 350 ٹن خوراک سے لدا بحری جہاز بھی ایران کی ایک بندرگاہ پر روانگی کے لیے تیار ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ پیر کو چھ عرب ممالک سعودی عرب، مصر، متحدہ عرب امارات، بحرین، لیبیا اور یمن نے قطر کے ساتھ سفارتی تعلقات مقطع کردتے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption سفارتی تعلقات کے منقطع ہونے کی وجہ سے قطر میں خوراک کی قلت پیدا ہوگئی ہے

ان ممالک کا الزام ہے کہ قطر اخوان المسلمون کے علاوہ دولتِ اسلامیہ اور دیگر شدت پسند تنظیموں کی حمایت کرتا ہے۔

قطر نے اس اقدام کو بلاجواز اور بلاوجہ قرار دیا ہے۔

کویت کے امیر اس بحران کے حل کے لیے قطر، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے ساتھ سفارتی کوششیں کر رہے ہیں۔

منگل کو قطر کے دارالحکومت دوحہ میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے قطری وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ قطر کو 'تنہا' کیا گیا ہے کیونکہ 'ہم کامیاب ہیں اور ترقی کر رہے ہیں۔'

امریکی وزیرِ خارجہ ریکس ٹلرسن نے سعودی عرب اور دوسرے خلیجی ممالک پر زور دیا تھا کہ وہ قطر کے ناکہ بندی میں نرمی کریں تاہم صدر ٹرمپ نے متعدد بار عرب ممالک کے موقف کی تائید کی ہے۔

اسی بارے میں