فرانس انتخابات: میکخواں کی جماعت کے لیے بھاری کامیابی کے اشارے

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption میکحواں کی پارٹی کو پہلے مرحلے میں 30 فیصد سے زیادہ ووٹ مل سکتے ہیں

فرانس میں پارلیمانی انتخابات کے پہلے مرحلے کے بعد ایگزٹ پول کے نتائج سے ظاہر ہو رہا ہے کہ صدر امینول میکخواں کی پارٹی بھاری اکثریت سے کامیابی حاصل کرنے والی ہے۔

* فرانس میں اعتدال پسند میکخواں صدر منتخب

* ’صدر ٹرمپ کے ساتھ سخت مصافحہ جان بوجھ کر کیا‘

اتوار کو ہوئے پہلے مرحلے کی پولنگ کے بعد ایگزٹ کے نتائج میں میکخواں کی پارٹی کو 577 رکنی قومی اسمبلی میں 445 سے زائد سیٹیں مل سکتی ہیں۔

میکخواں کی پارٹی کو وجود میں آئے ابھی ایک سال ہی ہوا ہے اور اس کے کئی امیدواروں کو سیاست کا بہت کم یا بالکل بھی تجربہ نہیں ہے۔

پارلیمانی انتخابات کے دوسرے مرحلے کی ووٹنگ اگلے اتوار کو ہوگی۔

بتایا گیا ہے کہ میکحواں کی پارٹی کو پہلے مرحلے میں 30 فیصد سے زیادہ ووٹ مل سکتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption پارلیمانی انتخابات کے دوسرے مرحلے کی ووٹنگ اگلے اتوار کو ہوگی

اگرچہ ووٹ ڈالنے والوں کی تعداد بہت کم رہی۔ تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ اس کی وجہ میکخواں کے حریفوں کے حامیوں میں شکست کی مایوسی ہو سکتی ہے۔

سنہ 2012 میں ہونے والے پہلے مرحلے کی میں پولنگ کی شرح 57.2 تھی جو اب کی بار کم ہو کر 48.7 ہو گئی تھی۔

اپوزیشن ریپبلکن پارٹی کو 21 اور دائیں بازو کی نیشنل فرنٹ کو 13 فیصد ووٹ ملنے کی امید ہے۔

پارلیمنٹ میں مکمل اکثریت ملنے کے بعد ہی 39 سالہ میکخواں اقتصادی بہتری اور سماجی شعبے میں سرمایہ کاری کی سمت میں قدم بڑھا سکیں گے۔

ایگزٹ پول کے نتائج کے بعد حکومت کے ایک ترجمان نے کہا کہ ووٹروں نے دکھایا ہے کہ وہ بہت جلد اہم اصلاحات چاہتے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں