طیارے کے انجن میں سوراخ، بحفاظت لینڈنگ

چین ایسٹرن ایئر لائنز تصویر کے کاپی رائٹ EPA

چین ایسٹرن ایئر لائنز کا ایک طیارہ حادثے کا شکار ہونے سے اس وقت بچ گیا جب تکنیکی خرابی کی وجہ سے اس کے انجن میں سوراخ ہوگیا تاہم اسے واپس سڈنی ایئر پورٹ پر بحفاظت اتار لیا گیا۔

چین ایسٹرن ایئر لائنز کی ایم یو 736 پرواز آسٹریلوی شہر سڈنی سے شنگھائی کی جانب جا رہی تھی جب پرواز کے ایک گھنٹے کے بعد پائلٹ کو جہاز کے انجن میں خرابی کا پتہ چل گیا۔ جس کے بعد ایئر بس اے 330 کو بحفاظت سڈنی ایئر پورٹ پر اتار لیا گیا۔

جنوبی کوریا کا غرقاب جہاز تین برس بعد سمندر سے نکالا گيا

کینیڈا میں مسافر طیارہ ڈرون سے ٹکراتے ٹکراتے بچا

اس طیارے میں سوار مسافر جنھیں رات سڈنی میں گذارنی پڑی نے میڈیا کو بتایا کہ انھیں جہاز کے اندر کسی چیز کے جلنے کی بو آئی۔

آسٹریلیا کے سوشل میڈیا میں مسافر طیارے کے انجن میں ہونے والے بڑے سوراخ کی تصاویر وائرل ہو رہی ہیں۔

طیارے میں سوار متعدد مسافروں کا کہنا ہے کہ انھوں نے اڑان کے تھوڑی ہی دیر بعد انجن کی بائیں جانب سے آتے ہوئے شدید شور کو سنا۔

جہاز میں سوار ایک خاتون مسافر نے آسٹریلیا کے سیون نیوز نیٹ ورک کو بتایا 'ہم لوگوں کو اچانک آواز سنائی دی اور ایسا محسوس ہوا جیسے کچھ جل رہا ہے۔ میں بہت ڈر گئی تھی اور ہمارا گروپ بھی۔'

ایک دوسری خاتون مسافر نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا 'کیبن کا عملہ باہر آیا اور ہمیں سیٹ بیلٹ باندھنے کو کہا اور ہمیں پرسکون کرنے کی کوشش کی لیکن حقیقت یہ ہے کہ ہم بہت ڈر گئے تھے اور ہمیں اس بات کا کوئی آئیڈیا نہیں تھا کہ کیا ہو رہا ہے۔؟'

دوسری جانب چین ایسٹرن ایئر لائنز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ طیارے کے عملے نے انجن کی غیر معمولی صورت حال کا مشاہدہ کیا اور فوری طور پر سڈنی ایئرپورٹ پر واپس جانے کا فیصلہ کیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں