عراقی شہر موصل میں مبینہ زہریلا کھانا کھانے سے سینکڑوں افراد بیمار

عراق تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

عراق کے شہر موصل کے قریب حکام کے مطابق بے گھر افراد کے ایک کیمپ میں مبینہ طور پر کھانا کھانے سے سینکڑوں افراد بیمار ہو گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق لوگوں کو افطار کا کھانا کھانے کے بعد قے آنا شروع ہو گئی اور وہ پانی کی کمی کا شکار ہو گئے۔

کردش نیوز ایجنسی رودا کا کہنا ہے کہ اب تک بیمار ہونے والے 750 افراد کا اندراج کیا جا چکا ہے جبکہ کم سے کم ایک بچہ ہلاک ہوا ہے۔

موصل: دولت اسلامیہ کے علاقے سے انخلا کی کوشش کے دوران 'درجنوں شہری ہلاک'

موصل کے شہری شدید خطرے میں ہیں: اقوامِ متحدہ

'موصل میں شہریوں کی ہلاکتیں ممکنہ 'جنگی جرائم': ایمنیسٹی

نیوز ایجنسی کے مطابق یہ کھانا اربل کے ایک ریستوران میں تیار کیا گیا اور قطاری نامی خیراتی ادارہ اسے کیمپ میں لے کر آیا۔

اطلاعات کے مطابق علاقے کے تین مختلف ہسپتالوں میں متاثرہ افراد کا علاج کیا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ یہ کیمپ موصل شہر اور ارد گرد کے دیہاتوں سے جان بچا کر بھاگنے والے افراد کے لیے اقوامِ متحدہ کے ادارے برائے مہاجرین کی جانب سے قائم کیے جانے والے 13 کیمپوں میں سے ایک تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں