رقہ: روسی حملے میں دولتِ اسلامیہ کے سربراہ ابوبکر البغدادی کی ممکنہ ہلاکت کی تحقیقات

البغدادی تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

روسی وزارتِ دفاع کا کہنا ہے کہ شام میں دولتِ اسلامیہ کے شدت پسندوں پر کیے گئے ایک فضائی حملے میں تنظیم کے سربراہ ابو بکر البغدادی کی ہلاکت کی اطلاعات کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

روس کی وزارتِ دفاع کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ممکنہ طور البغدادی 28 مئی کو کیے گئے فضائی حملے میں ہلاک ہو گئے ہیں۔

حملے میں شمالی شام کے شہر رقہ میں جو کہ دولتِ اسلامیہ کا خود ساختہ دارالحکومت، دولتِ اسلامیہ کی کونسل کے اجلاس کو نشانہ بنایا گیا تھا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی متعدد بار ابو بکر البغدادی کی ہلاکت کی اطلاعات موصول ہو چکی ہیں۔

کچھ عرصے سے ان کے بارے میں ایسی کوئی اطلاع سامنے نہیں آئی تھی کہ وہ کہاں ہیں۔ اگرچہ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ گذشتہ برس کے آخر میں امریکہ کی جانب سے موصل پر حملے سے قبل تک ابو بکر البغدادی وہیں موجود تھے۔

نومبر 2016 میں دولت اسلامیہ نے ابوبکر البغدادی کا ایک نیا آڈیو پیغام بھی جاری کیا تھا جس میں عوام سے کہا گیا تھا کہ وہ عراقی فوج کے خلاف موصل شہر کا دفاع کریں۔

تاہم اس پیغام کی آزاد ذرائع سے تصدیق نہیں ہو سکی تھی۔

خیال رہے کہ امریکہ نے البغدادی کی گرفتاری یا ہلاکت پر دس ملین ڈالر کے انعام کا اعلان بھی کیا ہوا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں