الجزیرہ کا عربی ٹوئٹر اکاؤنٹ بحال کر دیا گیا

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

خبر رساں ادارے الجزیرہ کا عربی زبان کا ٹوئٹر اکاؤنٹ کچھ دیر کی بندش کے بعد بحال کر دیا گیا ہے۔

الجزیرہ کا کہنا ہے کہ ان کے ٹوئٹر اکاؤنٹ کے خلاف ایک منظم مہم کے تحت جعلی شکایات کی گئیں جس کی وجہ سے یہ اکاؤنٹ بند کر دیا گیا تھا۔

’قطر پالیسیاں تبدیل نہیں کرتا تو روابط بحال نہیں کریں گے‘

واضح رہے کہ حال ہی میں چھ عرب ممالک سعودی عرب، مصر، متحدہ عرب امارات، بحرین، لیبیا اور یمن نے قطر کے ساتھ سفارتی تعلقات مقطع کردتے تھے۔ ان ممالک کا الزام ہے کہ قطر اخوان المسلمون کے علاوہ دولتِ اسلامیہ اور دیگر شدت پسند تنظیموں کی حمایت کرتا ہے۔ قطر نے اس اقدام کو بلاجواز اور بلاوجہ قرار دیا ہے۔

الجزیرہ قطر کا سرکاری خبر رساں ادارہ ہے۔

ایک کروڑ 20 لاکھ فالورز والے الجزیرہ کے عربی زبان کے ٹوئٹر اکاؤنٹ کو سنیچر کی صبح غیر واضح وجوہات کی بنا پر بند کر دیا گیا تھا۔

تاہم قطری وقت کے مطابق اتوار کی دوپہر تک یہ اکاؤنٹ بحال کر دیا گیا۔

ٹوئٹر قوانین کے مطابق کسی بھی اکاؤنٹ کو بند یا معطل کرنے کی تین بڑی وجوہات ہوتی ہیں:

  1. اگر کوئی اکاؤنٹ سپیم بھیج رہا ہو
  2. اگر کوئی اکاؤنٹ ہیک ہوگیا ہو
  3. اگر کوئی اکاؤنٹ نازیبہ الفاظ کا استعمال کر رہا ہو یا کسی کو دھمکیاں دے رہا ہو۔

واضح رہے کہ کسی قومی خبر رساں ادارے کے اس طرح کے اکاؤنٹ کو بند کیا جانا انتہائی غیر معمولی بات ہے۔

الجزیرہ کے سنیئر ایڈیٹر کا کہنا تھا کہ یہ اکاؤنٹ اس وقت بند کیا گیا جب اس اکاؤنٹ کے خلاف شکایات کا ایک ’طوفان‘ برپا کر دیا گیا۔

یاد رہے کہ سعودی عرب کی قیادت میں قطر کے ساتھ تعلقات منقطع کرنے والے عرب ممالک نے قطر کی سرکاری ایئر لائن قطر ایئر ویز کو فضائی راستوں کی رسائی بھی روک دی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں