ڈیوک آف ایڈنبرا شہزادہ فلپ ہسپتال میں داخل

ڈیوک آف ایڈنبرا تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بکنگھم پیلس نے اعلان کیا ہے کہ ڈیوک آف ایڈنبرا شہزادہ فلپ کو گذشتہ رات 'احتیاطی اقدام' کے طور پر ہسپتال میں داخل کروایا گیا ہے۔

بکنگھم پیلس نے تصدیق کی ہے کہ ڈیوک آف ایڈنبرا شہزادہ فلپ کو پہلے سے لاحق ایک بیماری کی وجہ سے ہونے والے انفیکشن کا علاج کیا جا رہا ہے۔

شہزادہ فلپ اپنی شاہی ذمہ داریوں سے سبکدوش ہو رہے ہیں

شاہی محل کے مطابق پرنس فلپ کی صحت اب بہتر ہے۔

ملکہ برطانیہ اپنے سرکاری فرائض بدستور سر انجام دیتی رہیں گی اور بدھ کو برطانوی پارلیمان سے خطاب کریں گی۔

اس تقریر میں اگلے دو سال کے لیے حکومت کی قانون سازی کے پروگرام کا ذکر ہو گا جس پر بریگزٹ حاوی رہے گا۔

بکنگھم پیلس کی جانب سے منگل کی صبح جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ ڈیوک آف ایڈنبرا شہزادہ فلپ کی علالت کے بعد اب پرنس آف ویلز شہزادہ چارلس ملکہ برطانیہ کے ہمراہ پارلیمان جائیں گے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ شہزادہ فلپ نے ملکۂ برطانیہ کے ہمراہ پارلیمان نہ جانے کو 'مایوس کن' قرار دیا ہے۔

بکنگھم پیلس کے مطابق ملکۂ برطانیہ پہلے سے طے شدہ پروگرام کے مطابق بدھ کی دوپہر رائل اسکوٹ میں شرکت کریں گی۔

خیال رہے کہ 96 سالہ پرنس فلپ کے بارے میں بکنگھم پیلس نے اعلان کیا تھا کہ وہ اس سال موسمِ خزاں میں اپنی شاہی ذمہ داریوں سے ریٹائر ہو جائیں گے۔

شاہی محل کے ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ شہزادہ فلپ اگست تک پہلے سے طے شدہ اپنی ذمہ داریوں کو نبھائیں گے لیکن اب کوئی نیا دعوت نامہ قبول نہیں کریں گے۔

شہزادہ فلپ 780 سے زائد تنظیموں کے سرپرست، رکن اور صدر ہیں۔ وہ ان تنظیموں سے وابستہ تو رہیں گے لیکن ریٹائرمنٹ کے بعد سرگرم نہیں رہیں گے۔

اسی بارے میں