لوٹی گئی شاہی مہریں جنوبی کوریا کے حوالے

امریکہ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یہ نودارات اتوار کو صدر مون جنوبی کوریا پہنچائیں گے

امریکہ نے 60 برس قبل لوٹی گئی دو شاہی مہریں جنوبی کوریا کے حوالے کر دی ہیں۔ 16 ویں اور 17ویں صدی کی ان نوادرات کی قیمت ایک اعشاریہ پانچ ملین ڈالر بتائی جاتی ہے۔

شاہی مہریں جن پر کچھوے بنے ہوئے ہیں، جمعہ کو واشنگٹن میں امریکہ کے دورے پر آئے جنوبی کوریا کے صدر کے حوالے کی گئیں۔

امریکہ 2007 سے اب تک 30 ممالک کو آٹھ ہزار اشیا لوٹا چکا ہے۔

جنوبی کوریا کی سب سے پرانی یہ نوادرات 1547 میں جنوبی کوریا کے 11 ویں بادشاہ کی تیسری بیوی ملکہ کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے بنائی گئیں تھیں۔ خیال کیا جاتا ہے کہ یہ نوادرات کوریا کی جنگ کے دوران چوری ہو گئی تھیں۔

اس کے علاوہ 1651 میں بادشاہ ہیوجونگ کے بنائی گئی نوادرات کوریا پر جاپانی تسلط کے دوران 1910 اور 1945 کے دوران چوری ہوئیں۔

ان نودارت کی چوری ہونے کی تحقیقات تب شروع کی گئیں جب ملکہ منجی اونگ کی شاہی مہر لاس اینجلس کے ایک میوزیم میں پائی گئیں جبکہ بادشاہ ہیوجونگ کی نودرات ایک نجی کلکشن سے ملیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں