لندن تیزاب پھینکنے کے شبہے میں ایک نوجوان گرفتار

لندن، پولیس تصویر کے کاپی رائٹ PA

برطانوی پولیس نے جمعرات کی شب لندن کے مختلف علاقوں میں شہریوں پر تیزاب پھینکنے کے واقعات کے بعد ایک نوجوان کو گرفتار کر لیا ہے۔

گذشتہ رات مشرقی لندن میں شہریوں پر تیزاب پھینکنے کے پانچ واقعات پیش آئے ہیں۔

حملہ آوروں نے 90 منٹ ہیکنی اور نیونگٹن میں کارروائی کی۔ میٹروپولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ آور موٹر سائیکل پر سوار تھے۔

حملے کا نشانہ بننے والے افراد کو ہسپتال منتقل کیا گیا۔ ایک زخمی کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ وہ شدید زخمی ہے۔

تاہم ابھی تک کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی۔

گرینچ کے مقامی وقت کے مطابق جمعرات کی شب دس بج کر 25 منٹ پر ہیکنی میں موٹر سائیکل پر سوار ایک 32 سالہ شخص کو ایک دوسرے موٹر سائیکل پر سوار دو حملہ آوروں نے نشانہ بنایا جس سے ان کا چہرہ زخمی ہو گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دونوں افراد نے متاثرہ شخص کے چہرے پر تیزاب کا سپرے کیا اور اسے پرے دھکیل کر اس کی موٹر سائیکل بھی چھین لی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وہ متاثرہ شخص کے زخموں کے بارے میں معلومات ملنے کا انتظار کر رہے ہیں۔

پہلے حملے کے بعد دوسرا حملہ 11 بج کر پانچ منٹ پر شورڈچ ہائی سٹریٹ میں موٹر سائیکل پر سوار دو افراد نے کیا۔

اس میں نشانہ بننے والے شخص کو بھی ہسپتال لے جایا گیا۔ تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ اس شخص کو ایسے زخم نہیں آئے جو اس کی زندگی کے لیے خطرہ ہوں یا آنے والے وقت میں اس کی زندگی کو متاثر کرنے والے ہوں۔

شب 11 بج کر 18 منٹ پر پولیس کو سٹوک نٹوینگٹن میں کیزنیو روڈ پر ڈکیتی کی اطلاع ملی اور انھیں معلوم ہوا کہ اس واقعے میں بھی تیزابی مادے کا استعمال ہوا ہے۔ بتایا گیا کہ جس شخص کے چہرے پر یہ مادہ ڈالا گیا اس سے ان کا چہرہ بہت متاثر ہوا ہے۔

شب 11 بج کر 37 منٹ پر کلیپٹن کے علاقے میں چیٹسورتھ روڈ پر ٹریفک میں موجود ایک شخص پر موٹر سائیکل پر آنے والے دو افراد نے تیزاب پھینکا اور پھر اسے پرے دھکیل کر اس کی بائیک بھی چھین لی۔

متاثرہ شخص کو مشرقی لندن میں پولیس کے حوالے کر دیا گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ تحقیقات ہو رہی ہیں اور مبینہ حملہ آوروں کو تلاش کا سراغ لگانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

اسی بارے میں