شیرنی نے تیندوے کے بچے کو گود لے لیا

شیرنی تصویر کے کاپی رائٹ JOOP VAN DER LINDE/NDUTU LODGE
Image caption ماہرین نے کہا ہے کہ انھوں نے اس قسم کا واقعہ پہلے کبھی نہیں دیکھا

اپنی نوعیت کے ایک انتہائی منفرد واقعے میں افریقہ کی ایک شیرنی نے تیندوے کے بچے کو گود لے لیا ہے اور اسے دودھ پلا رہی ہے۔

یہ واقعہ تنزانیہ کے اینگورونگورو کے علاقے میں پیش آیا اور اسے جوپ وانڈر لنڈ نامی ایک فوٹوگرافر نے کیمرے میں محفوظ کر لیا۔

یہ سیرنگیٹی کا علاقہ ہے جہاں نوسیٹیٹوک نامی ایک پانچ سالہ شیرنی کو ایک تیندوے کے بچے کو دودھ پلاتے اور اس کا خیال رکھتے ہوئے پایا گیا۔

اس شیرنی کے اپنے بچے بھی ہیں جو 27، 28 جون کو پیدا ہوئے تھے۔

شیروں کے تحفظ کے ادارے پینتھیرا کے صدر ڈاکٹر لوک ہنٹر نے بی بی سی کو بتایا کہ یہ 'بےحد منفرد' واقعہ ہے۔

انھوں نے کہا: 'میرے علم میں نہیں ہے کہ بلی کی نسل کے بڑے درندوں میں اس قسم کا کوئی واقعہ پیش آیا ہو۔ ہمیں یہ تو معلوم ہے کہ شیرنیاں شیروں کے بچوں کو گود لے لیتی ہیں، لیکن یہ واقعہ غیرمعمولی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ JOOP VAN DER LINDE/NDUTU LODGE

'میرے علم میں اس قسم کا کوئی دوسرا واقعہ نہیں ہے جہاں ایک نسل نے دوسری نسل کا بچہ گود لیا ہو۔'

عام طور پر شیرنیاں اس قسم کے بچوں کو مار ڈالتی ہیں تاکہ وہ بڑے ہو کر ان کے بچوں سے مقابلہ نہ کر سکیں۔

ڈاکٹر ہنٹر نے کہا کہ نوسیٹیٹوک کے اپنے بچے بھی ہیں اور ان کی عمریں تیندوے کے بچے جتنی ہی ہیں۔

انھوں نے کہا: 'اس نے یہ بچہ دیکھا اور اسے اپنا لیا۔ اس کے اندر مامتا کے ہارمون دوڑ رہے ہیں۔'

تصویر کے کاپی رائٹ JOOP VAN DER LINDE/NDUTU LODGE
Image caption اس بچے کی عمر دو سے تین ہفتے ہے

فی الحال یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ اس بچے کی اصل ماں کہاں ہے۔ سفاری کے مقامی کارکنوں کا کہنا ہے کہ اسی علاقے میں ایک مادہ تیندوا ہے جس کے بچے بھی ہیں اور ممکنہ طور پر وہ اس بچھڑے بچے کی ماں ہو سکتی ہے۔

ماہرین کے مطابق اس بچے کے لیے یہی بہتر ہو گا کہ وہ دوبارہ اپنی ماں سے جا ملے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں