اقوام متحدہ کی پابندیوں پر شمالی کوریا کا امریکہ کو انتباہ

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

شمالی کوریا نے اقوام متحدہ کی جانب سے نئی پابندیوں کے بعد امریکہ کو متنبہ کیا ہے کہ وہ جوابی کارروائی کرے گا اور امریکہ کو اس کی قیمت چکانی ہو گی۔

خیال رہے کہ سنیچر کو اقوام متحدہ نے متفقہ طور پر شمالی کوریا کے خلاف پابندیوں کی توثیق کی تھی تاہم شمالی کوریا کی سرکاری خبر رساں ایجنسی 'کے سی این اے' کے مطابق یہ شمالی کوریا کے استحکام کی خلاف ورزی ہے۔

چین شمالی کوریا کا واحد اتحادی ملک ہے، تاہم اس نے بھی اس قرارداد کے حق میں ووٹ دیا تھا۔ ماضی میں وہ شمالی کوریا کو ویٹو کے ذریعے ضرر رساں پابندیوں سے بچاتا رہا ہے۔

ادھر جنوبی کوریا کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا نے دوبارہ مذاکرات کی پیشکش کو مسترد کر دیا ہے۔

چین نے بھی شمالی کوریا کا ساتھ چھوڑ دیا

ان نئی پابندیوں کی وجہ سے شمالی کوریا کی برآمدات ایک تہائی تک متاثر ہوگی۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا فیصلہ شمالی کوریا کی جانب سے بار بار میزائل تجربات کے بعد سامنے آیا ہے۔

پیر کو سامنے آنے والے بیان میں شمالی کوریا نے کہا ہے کہ وہ اپنے متنازع جوہری ہتھیاروں کی تیاری کے پروگرام کو جاری رکھے گا۔

شمالی کوریا نے اقوام متحدہ کی جانب سے پابندیوں کے ڈرافٹ کی تیاری میں کردار ادا کرنے پر امریکہ کو یہ دھمکی بھی دی ہے کہ اسے اس جرم کی قیمت ہزار بار چکانی ہو گی۔

منیلا میں صحافیوں سے گفتگو میں شمالی کوریا کی حکومت کے ترجمان وانگ ہوک نے کہا کہ 'کوریائی جزیرہ نما میں خراب ہوتی صورتحال اور جوہری ایشوز امریکہ کی وجہ سے پیدا ہوئے۔'

ان کا کہنا تھا کہ ہم اس بات پر قائم ہیں کہ ہم اپنے جوہری اور بیلسٹک پروگرام کے حوالے سے مذاکرات کی میز پر نہیں آئیں گے اور جوہری پروگرام کے حوالے سے ایک انچ پیچھے نہیں ہٹیں گے۔'

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں