شمالی کوریا کا گوام کو دنوں میں نشانہ بنانے کا وعدہ

شمالی کوریا تصویر کے کاپی رائٹ AFP

شمالی کوریا کا کہنا ہے کہ وہ اگست کے وسط تک بحرالکاہل میں امریکی جزیرے گوام کے قریب چار میزائلوں کو داغنے کے قابل ہو جائے گا۔

شمالی کوریا کے سرکاری میڈیا کا کہنا ہے کہ اگر ان کے رہنما کم جو اُن نے اس منصوبے کی منظوری دے دی تو ہاساسونگ نامی 12 راکٹ جاپان کے اوپر سے گذرتے ہوئے گوام سے 30 کلو میٹر دور سمندر میں جا گریں گے۔

واضح رہے کہ پیانگ یانگ اور واشنگٹن کے درمیان شمالی کوریا کے متنازع جوہری ہتھیاروں کی تیاری کے حوالے سے الفاظ کی جنگ میں شدت دیکھنے میں آئی ہے۔

شمالی کوریا کا امریکی اڈے 'گوام کو نشانہ بنانے' پر غور

اقوام متحدہ کی پابندیوں پر شمالی کوریا کا امریکہ کو انتباہ

چین نے بھی شمالی کوریا کا ساتھ چھوڑ دیا، اقوام متحدہ کی نئی پابندیاں

شمالی کوریا میں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے دی جانے والی دھمکی کی مزمت کی گئی ہے اور امریکی صدر کو ' عقل سے خالی شخص' قرار دیا گیا۔

خیال رہے کہ امریکی وزیرِ دفاع جیمز میٹس نے شمالی کوریا سے کہا ہے کہ وہ ایسے اقدامات کرنے سے گریز کرے جو 'اسے اس کی حکومت کے خاتمے اور عوام کی تباہی کی جانب لے جائیں۔'

جیمز میٹس کا کہنا تھا کہ شمالی کوریا کا امریکہ اور اس کے اتحادیوں کے خلاف 'جنگ میں کوئی جوڑ نہیں ہے۔'

امریکی وزیر دفاع کا یہ بیان ڈونلڈ ٹرمپ کے اس بیان سے ایک دن بعد سامنے آیا تھا جس میں انھوں نے کہا تھا کہ اگر جنوبی کوریا نے امریکہ کو مزید دھمکی دی تو اسے 'آگ اور غصے'کا سامنا کرنا پڑے گا۔

شمالی کوریا نے بدھ کو ایک بیان میں کہا تھا کہ وہ بحرالکاہل میں امریکی جزیرے گوام کو میزائل سے نشانہ بنانے کے بارے میں غور کر رہا ہے۔

شمالی کوریا کی جانب سے جاری کیے جانے والے ایک بیان میں کہا گیا 'فوج اگست کے وسط تک اس منصوبے کو مکمل کر لے گی اور کم جونگ ان سے اس کی منظوری لے گی۔

شمالی کوریا کی سرکاری ایجنسی کے سی این کے نے آرمی چیف جنرل کم راک کے حوالے سے بتایا کہ کورین پیپلز آرمی کے بنائے ہوئے ہاساسونگ نامی 12 راکٹ جاپان کے اوپر سے گذرتے ہوئے گوام سے 30 کلو میٹر دور سمندر میں جا گریں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا 'یہ راکٹ 3,356.7 کلومیٹر اور 1,065 سیکنڈز میں گوام سے 30 سے 40 کلو میٹر دور جا گریں گے۔

اسی بارے میں