امریکہ: ریاست ٹیکساس میں طوفان کے باعث ’شدید سیلاب‘ کا خطرہ

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ریاست کے گورنر گریگ ایبٹ کا کہنا ہے کہ مستقل بارشوں کے باعث ریاست میں سیلاب کا خطرہ ہی سب سے بڑا خطرہ ہے

امریکی نیشنل ہریکین سینٹر نے خبردار کیا ہے سمندری طوفان 'ہاروی' ریاست ٹیکساس سے ٹکرا گیا ہے اور اپنے ساتھ 200 کلومیٹر فی گھنٹہ سے زیادہ رفتار کے جھکڑ اور طوفانی بارشیں بھی ساتھ لایا ہے جس سے ریاست میں ’شدید سیلاب‘ آنے کا خطرہ ہے۔

ادھر ریاست کے گورنر گریگ ایبٹ کا کہنا ہے کہ مستقل بارشوں کے باعث ریاست میں سیلاب کا خطرہ ہی سب سے بڑا خطرہ ہے۔ شہر ہیوسٹن میں 20 انچ بارس پہلے ہی ہو چکی ہے اور گورنر کا کہنا تھا کہ آئندہ ہفتے کے دوران مزید 40 انچ بارش متوقع ہے۔

ہاروی ساحل سے ٹکرانے والا کیٹگری فور کا طوفان بتایا جا رہا ہے اور کہا جا رہا ہے کہ یہ امریکہ میں گذشتہ 13 سالوں میں آنے والا سب سے خطرناک طوفان ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ بہت سے رہائشی تباہ ہونے والی عمارتوں میں پھنسے ہوئے ہیں جبکہ بڑے پیمانے پر بجلی کا نظام بھی متاثر ہوا ہے۔

٭ طوفان ’ہاروی‘: ہزاروں افراد گھر چھوڑنے پر مجبور

طوفان کے باعث بارشوں کا سلسلہ کئی دنوں تک جاری رہنے کا امکان ہے۔ مکان میں آگ لگنے کے باعث ایک شخص ہلاک ہوا ہے۔

این ایچ سی نے خبردار کیا ہے کہ امریکی ریاست ٹیکساس کے ساحل کے وسطی اور بالائی علاقوں میں 40 انچ تک بارش ہونے کا امکان ہے۔

بہت سے علاقوں سے تو اب تک 10 انچ سے زیادہ بارش ہونے کی اطلاعات موصول ہو چکی ہیں۔

ساحلی شہر کارپس کرسٹی کے رہائشی پہلے ہی شدید مشکلات کا شکار ہیں کیونکہ طوفانی ہواؤں کی وجہ سے جمعے کی شب سے شہر کا بجلی کا نظام درہم برہم ہو گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

ٹیکساس کے گورنر گریگ ایبٹ نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ شہر کارپس کرسٹی میں 20 انچ اور ہیوسٹن میں 16 تک بارش ریکارڈ کی گئی ہے، لیکن اس کے علاوہ مزید 20 سے 30 انچ تک بارش کا امکان ہے۔

یوٹیلیٹی کمنیوں کا کہنا ہے کہ تقریباً تین لاکھ افراد کو اس وقت بجلی کی سہولت دستیاب نہیں ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے متاثرہ علاقوں کے لیے وفاقی امداد بھیجنے کا کہا ہے۔ گورنر ایبٹ نے انتظامیہ کی جانب سے اس طرح کے ’اقدام‘ کو سراہا ہے۔

اسی بارے میں