چین میں لیڈی گاگا کے گانے بلیک لسٹ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption چین کی حکومت نے لیڈی گاگا کے چھ گانے بلیک لسٹ کیے ہیں۔

چین کی وزارتِ ثقافت نے امریکی گلوکارہ لیڈی گاگا اور بیونسے کے انٹرنیٹ پر مشہور گانوں سمیت سو گانوں کو ملک میں ’بلیک لسٹ‘ کر دیا ہے۔

چینی حکام کا کہنا ہے کہ بلیک لِسٹ کیے جانے والے گانے ملک کی ’عوامی ثقافتی سلامتی‘ کے لیے نقصان دہ ہیں۔

حکام نے ان گانوں کی ویب سائٹس کو پندرہ ستمبر تک انٹرنیٹ سے ہٹانے کی مہلت دی ہے جس کے بعد ان کے خلاف عدالتی کارروائی کی جائے گی۔

واضح رہے کہ چین میں حکومت نے انٹرنیٹ پر سخت پابندیاں عائد کر رکھی ہیں اور چین میں ویب سائٹس کی روک تھام اور بندش معمول ہے۔

اگرچہ اس بات کی ابھی تک تصدیق نہیں کی جا سکی کہ جن ویب سائٹس کو نوٹس جاری کیا گیا ہے وہ غیر قانونی طور پر گانے چلا رہی ہیں یا قانونی لیکن سنہ دو ہزار نو میں اسی طرح کی ایک حکومتی کارروائی میں غیر قانونی ویب سائٹس اور ’ناگوار‘ میوزک، دونوں پر ہی پابندی عائد کی گئی تھی۔

اس سال کی فہرست میں زیادہ تر گانے تائیوان، ہانگ کانگ، اور جاپان سے ہیں جبکہ مغربی ممالک سے بلیک لسٹ کیے جانے والے گانوں میں لیڈی گاگا کے چھ گانے، دی ایج آف گلوری، ہیئر، میری دی نائٹ، امیریکانو، جودس اور بلڈی میری شامل ہیں۔

لیڈی گاگا کے علاوہ امریکی گلوکارہ بیونسے کا رن دی ورلڈ نامی گانا بھی اس فہرست میں شامل ہے۔

اسی بارے میں