بون: جسم فروشی ٹیکس، میٹر نصب

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

جرمنی کے شہر بون میں حکام نے میٹر نصب کیے ہیں تاکہ چھ یوروز فی رات کے حساب سے ٹیکس ان جسم فروش خواتین سے وصول کیا جا سکے جو سڑکوں پر گاہک ڈھونڈتی ہیں۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق جب پہلی بار اس میٹر میں سے رقم نکالی گئی تو اس میں 264 یوروز تھے۔

حکام کا کہنا ہے کہ جو جسم فروش خواتین اس میٹر میں رقم نہیں ڈالیں گی ان پر جرمانہ عائد کیا جائے گا یا پھر پابندی عائد کر دی جائے گی۔

بون حکومت کی ترجمان نے کہا کہ جرمنی کے مختلف شہروں میں جسم فروشوں پر پہلے ہی سے ٹیکس لاگو ہے لیکن بون پہلا شہر ہے جہاں ٹیکس میٹر کے ذریعے لیا جا رہا ہے۔

تاہم جسم فروشوں کے حق میں آواز بلند کرنے والوں کا کہنا ہے کہ یہ دوہرا ٹیکس ہے۔ جسم فروشوں کو ایک جتنا ہی ٹیکس دینا پڑ رہا ہے چاہے ان کی کمائی ہوئی ہو یا نہیں۔

بون شہر کی رجمان کا کہنا ہے کہ بون حکومت کو توقع ہے کہ میٹر سے سالانہ دو لاکھ یورو اکٹھے ہوں گے۔

’وہ خواتین جو اڈوں پر کام کرتی ہیں پہلے ہی ٹیکس دیتی ہیں لیکن ابھی تک سڑکوں پر سے گاہک اٹھانے والی خواتین سے ٹیکس لینا مشکل ہو رہا تھا۔‘

ایک اندازے کے مطابق بون میں دو سو جسم فروش ہیں۔