انڈونیشیا: چرچ پر مشتبہ خودکش حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption چرچ پر حملے میں صرف مشتبہ خودکش بمبار ہلاک ہوا ہے۔

انڈونیشیا میں پولیس کا کہنا ہے کہ وسطی صوبۂ جاوا میں واقع ایک پروٹیسٹنٹ چرچ میں مشتبہ خودکش حملہ ہوا ہے۔

پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ سولو کے علاقے میں ہونے والے اس حملے میں مشتبہ خودکش بمبار ہلاک ہوگیا ہے جبکہ متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔

دنیا کا سب سے زیادہ مسلم آبادی والا ملک انڈونیشیا سرکاری طور پر ایک سیکولر ملک ہے۔ گزشتہ چند برسوں کے دوران اسلامی شدت پسند گروہوں نے کئی جان لیوا حملے کیے ہیں۔

موقع پر موجود لوگوں کا کہنا ہے کہ خودکش بمبار نے اپنے آپ کو اس وقت دھماکے سے اڑایا جب لوگ اتوار کی عبادت کے بعد چرچ سے باہر آرہے تھے۔

لیفٹننٹ کرنل جیہارتونو نے خبررساں ادارے اے ایف پی کو بتایا ’میں ابھی صرف یہ تصدیق کرسکتا ہوں کہ اس حملے میں صرف خودکش بمبار ہلاک ہوا ہے۔ ہم ابھی معلوم کرنے کی کوشش کررہے ہیں کہ اس میں کوئی اور شخص بھی ہلاک ہوا ہے یا نہیں۔‘

ان کے بقول اینٹی ٹیرر یونٹ موقع پر پہنچ کر شواہد جمع کررہا ہے۔

ایک اور پولیس افسر نے مقامی خبررساں ادارے انتارا کو بتایا کہ مشتبہ خودکش بمبار کی شناخت اور حملے کی وجہ اب تک معلوم نہیں ہوسکی ہے۔

مقامی ریڈیو الشِنتا کا کہنا ہے کہ زخمیوں کو دو مختلف ہسپتالوں میں لے جایا گیا ہے جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔

اسی بارے میں