قندھار: افغان وزیر پر خودکش حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption قندھار میں اس سے پہلے بھی متعدد بار حکومتی اہلکاروں اور سکیورٹی فورسز پر شدت پسند حملے کر چکے ہیں

افغانستان کے صوبہ قندھار میں حکام کے مطابق افغان وزیر برائے سرحدی اور قبائلی امور اسد اللہ خالد پر ایک خودکش حملہ ہوا ہے۔

حکام کے مطابق صوبہ قندھار کے ضلع ڈنڈ کے علاقے حاجی عرب میں ہونے والے خودکش حملے میں اسد اللہ خالد محفوظ رہے ہیں لیکن اس واقعے میں دو راہ گیر ہلاک اور سترہ افراد زخمی ہو گئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ حملہ آور ایک رکشہ میں سوار تھا اور اس نے افغان وزیر کے قافلے کے نزدیک بارود سے بھرے رکشہ کو دھماکے سے اڑا دیا۔

اطلاعات کے مطابق وزیر اس علاقے میں ترقیاتی کاموں کا جائزہ لینے کے لیے جا رہے تھے۔

کابل میں بی بی سی کے نامہ نگار بلال سروری کا کہنا ہے کہ’افغان وزیر کو قتل کرنے کے لیے یہ حملہ اس وقت کیا گیا جب وہ ضلع ڈنڈ میں جا رہے تھے۔‘

صوبہ قندھار طالبان کا روحانی گڑھ ہے اور یہاں پر شدت پسند متعدد بار سکیورٹی فورسز اور حکومتی اہلکاروں پر حملے کر چکے ہیں۔

اسی بارے میں