اٹلی: میلان میں گاڑیوں پر پابندی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption یہ پابندی پچھلی مرتبہ رواں سال فروری میں لگائی گئی تھی۔

اِٹلی کے شہر میلان میں آلودگی پر قابو پانے کے لیے رواں ہفتے بروز اتوار تمام ٹریفک پر دس گھنٹے کےلیے پابندی عائد کی جا رہی ہے۔

یہ حربہ پہلی مرتبہ سنہ دو ہزار سات میں آزمایاگیا تھا اور اس کے بعد سے شہر میں جب بھی آلودگی معمول سے بڑھ جاتی ہے تو اسے استعمال میں لایا جاتا ہے۔

مصنوعی سیارے سے لی گئی ایک تصویر کے مطابق میلان یورپ کے سب سے آلودہ شہروں میں سے ہے۔

ایک مقامی اخبار ’ کوریئر ڈیلا سیرا‘ کے مطابق اس پابندی سے ایک لاکھ بیس ہزارگاڑیاں متاثر ہوں گی جبکہ زیادہ آلودگی پھیلانے والی گاڑیوں کو رواں ہفتے جمعرات سے ہی سڑکوں پر چلنے سے روک دیا گیا تھا۔

تاہم بروز اتوار صبح آٹھ بجے سے لے کر شام چھ بجے تک ہر طرح کے ٹریفک پر پابندی عائد کی جا رہی ہے۔

یہ پابندی پچھلی مرتبہ رواں سال فروری میں لگائی گئی تھی۔

دوسری جانب ماہرِ ماحولیات اس پابندی کے حق میں نہیں ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ آلودگی پر قابو پانے کے لیے پبلک ٹرانسپورٹ کہ بہتر بنانا ضروری ہے تاکہ شہری کم گاڑیاں استعمال کریں۔

مقامی ’گرین پارٹی‘ کے کونسلر اینریکو فیڈرغینی کا کہنا ہے کہ جن گاڑیوں میں تین یا چار افراد سوار ہوں انھیں مفت پارکنگ فراہم کرنی چاہیے۔

ان کا کہنا تھا ’ہر ماہ ایک یا دو مرتبہ سڑکوں پر گاڑیوں کے چلنے پر پابندی لگانے سے آلودگی پر کچھ زیادہ فرق نہیں پڑے گا۔‘