بشار الاسد کے حق میں مظاہرہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شام کے دوسرے بڑے شہر ایلیپو میں ہزاروں افراد نے صدر بشار الاسد کے حق میں مظاہرہ کیا

شام کے دوسرے بڑے شہر ایلیپو میں ہزاروں افراد نے صدر بشار الاسد کی حمایت میں ایک مظاہرہ کیا ہے۔ مظاہرین نے شامی پرچم اور بشار الاسد کی تصاویر اٹھا رکھی تھیں۔ مظاہرین بشار الاسد کے حق میں نعرے لگا رہے تھے

کچھ روز قبل دارالحکومت دمشق میں بھی ہزاروں افراد نے صدر بشار الاسد کے حق میں مظاہرہ کیا تھا۔

اقوام متحدہ کےمطابق شام میں گزشتہ سات ماہ سے جاری احتجاجی مہم میں ابتک تین ہزار افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ حکومت کاموقف ہے کہ وہ مسلح دہشتگردوں سے نمٹ رہا ہے۔ حکومت کا کہنا ہے گزشتہ سات مہینوں میں گیارہ سو فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔

مظاہرین مجوزہ سیاسی اصلاحات کے حق میں نعرے بلند کر رہے تھے۔ یہ مظاہرہ ایسے منعقد کیا گیا جب شام کے دوسرے شہروں میں ہونے والی پولیس اور فوج کے ہاتھوں چوبیس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

شام کے سرکاری ٹیلویژن پر اس مظاہرے کی تصاویر دکھائی گئیں۔ مظاہرین نعرے لگا رہے ’ہم آپ سے محبت کرتے ہیں۔‘ بعض مظاہرین نے چین اور روس کے جھنڈے بھی اٹھا رکھے ۔ چین اور روس نے اقوام متحدہ میں شام کے خلاف پابندیوں لگانے سے متعلق قرار داد کو ویٹو کر دیا گیا تھا۔

شام کی اپوزیشن کا کہنا کہ صدر بشار الاسد کے حق میں مظاہرے حکومتی ایما پر ہو رہے ہیں۔