امریکہ: برفانی طوفان، لاکھوں بجلی سے محروم

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption نیویارک میں اکتوبر کے مہینے میں برف باری کا نیا ریکارڈ قائم ہوا ہے

امریکہ کی مشرقی ساحلی ریاستوں میں بے وقت کے برفانی طوفان نے تباہی مچا دی ہے اور ریاست میساچوسٹس کے بعض علاقوں میں ستائیس انچ سے زیادہ برف پڑی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ طوفان سے متعلقہ حادثات میں اب تک نو افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ ریاست میری لینڈ سے میساچوسٹس تک تیس لاکھ سے زائد مکانات کو بجلی کی فراہمی معطل ہو گئی ہے۔

شمال کی جانب رخ ہونے پر طوفان کی شدت میں اضافہ ہوا ہے اور متاثرہ ریاستوں میں مواصلات کا نظام بری طرح متاثر ہوا ہے۔

.امریکی حکام کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے افراد میں سے ریاست فلاڈلفیا میں چار اور نیویارک، نیوجرسی اور کنیکٹیکٹ میں ایک ایک سڑک پر حادثے کا شکار ہوا جبکہ پنسلوینیا میں ایک چوراسی سالہ شخص برفباری کے دوران اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔ اس کے علاوہ میساچوسٹس کے علاقے سپرنگ فیلڈ میں ایک شخص کرنٹ لگنے سے مارا گیا۔

ریاست کنیکٹیکٹ کے گورنر کا کہنا ہے کہ ساڑھے سات لاکھ کے قریب افراد بجلی سے محروم ہیں اور برفباری رکنے کے باوجود طوفان کے اثرات محسوس کیے جا رہے ہیں۔ سی بی سی نیوز کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ’ اگر آپ کو بجلی دستیاب نہیں ہے تو آپ کو طویل عرصےتک اس کے بغیر رہنے کے لیے تیار رہنا ہو گا‘۔

نیویارک میں اکتوبر کے مہینے میں برف باری کا نیا ریکارڈ قائم ہوا ہے جہاں سینٹرل پارک میں ایک اعشاریہ تین انچ تک برف پڑی ہے۔ اس پارک کی ایک سو پینتیس سالہ تاریخ میں اکتوبر کے مہینے میں صرف تین بار ہی برف گری ہے۔

.امریکہ محکمہ موسمیات کے مطابق’موسم سرما کا وقت سے پہلے کا برفانی طوفان وسط ایٹلانٹک ریاستوں میں ختم ہو گیا ہے لیکن مشرق میں نیو انگلینڈ میں جاری ہے اور توقع ہے کہ اس کا رخ کینیڈا کی جانب ہو جائے گا۔‘

اسی بارے میں