دنیا کے ستر طاقتور افراد کی نئی فہرست

سونیا گاندھی تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption کانگریس کی صدر سونیا گاندھی گيارہویں نمبر پر ہیں

امریکی جریدے فوربز نے دنیا کے ستر سب سے طاقتور افراد کی نئی فہرست جاری کی ہے جس میں پاکستان کی فوج اور خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کے سربراہان اور ممبئی انڈرولڈ کے سرغنہ داؤد ابراہیم کے نام بھی شامل ہیں۔

صدر براک اوباما کا نام سر فہرست ہے جبکہ بھارت میں کانگریس پارٹی کی صدر سونیا گاندھی گیارہویں نمبر پر ہیں۔

فہرست میں پاکستان کی فوج کے سربراہ جنرل پرویز اشفاق کیانی چونتیسویں نمبر پر ہیں جبکہ آئی ایس آئی کے سربراہ احمد شجاع پاشا چھپن نمبر پر ہیں۔ ان کے بعد داؤد ابراہیم کا نام شامل کیا گیا ہے۔

داؤد ابراہیم ممبئی میں انیس سو ترانوے کے سلسلہ وار بم حملوں کےسلسلے میں بھارتی تفتیشی اداروں کو مطلوب ہیں جس کا الزام ہے کہ انہوں نے مبینہ طور پر پاکستان میں پناہ لے رکھی ہے۔

بھارت کے وزیر اعظم من موہن سنگھ انیسویں مقام پر ہیں۔گزشتہ برس چین کے صدر ہو جنتاؤ سر فہرست تھے جو اس مرتبہ روس کے وزیر اعظم ولادیمیر پوتن کے بعد تیسرے نمبر پر پہنچ گئے ہیں۔

بھارت ہی کی رہنما سونیا گاندھی گزشتہ برس نویں مقام پر تھیں۔ ان کے بارے میں جریدے نے لکھا ہے کہ وہ بھارت کی سب سے طاقتور سیاست دان ہیں جنہوں نے دو مرتبہ وزیر اعظم کے عہدہ قبول کرنے سے انکار کیا اور یہ ذمہ داری منموہن سنگھ کو سونپ دی۔

جریدے نے انہیں دنیا کی ساتویں سب سے بارسوخ خاتون قرار دیا ہے۔

منموہن سنگھ کے بارے میں فوربز کا کہنا ہےکہ وہ ’ بدعنوانی سے پاک ہیں اور انہیں بھارت کے اقتصادی اصلاحات کا معمار مانا جاتا ہے جن کی وجہ سے ملک نے گزشتہ دہائی میں تیزی سے ترقی کی ہے۔‘

فہرست میں مشہور صنعت کار اور ریلائنس انڈسٹریز کے چئرمین مکیش امبانی پینتیسویں نمبر پر ہیں۔ آرسیلور متل کے چیئرمین لکشمی متل کو سینتالیسواں مقام حاصل ہوا ہے اور سافٹ وئر کی کمپنی وپرو کے چیئرمین عظیم پریم جی اکسٹھویں نمبر پر ہیں۔

جرمنی کی چانسلر اینگلا مرکل دنیا کی سب سے طاقتور خاتون ہیں۔ فہرست میں وہ چوتھے نمبر پر ہیں۔ یورپ کو درپیش مالی بحران کو حل کرنےکی کوششوں میں اینگلا مرکل نے کلیدی کردار ادا کیا ہے۔

مائیکروسافٹ کے چئرمین بل گیٹس پانچویں نمبر پر ہیں جبکہ فیس بک کے چیف ایکزیکٹیو آفیسر مارک زوکر برگ چالیسویں مقام سے نویں پر پہنچ گئے ہیں۔

عرب دنیا سے سعودی عرب کے بادشاہ عبداللہ بن عبدالعزیز چھٹے نمبر پر ہیں اور ان کے بعد پاپائے روم بینیڈکٹ کا نام شامل کیا گیا ہے۔

جن لوگوں کے نام اس سال کی فہرست میں شامل نہیں ہیں ان میں اسامہ بن لادن اور سٹیو جابس ( دونوں اب اس دنیا میں نہیں ہیں) اوپرا ونفری، ڈومینیک سٹراس کاہن اور جولین اسانژ شامل ہیں۔

فوربز نے لکھا ہے کہ ’امریکہ بلاشبہہ دنیا کا سب سے طاقتور ملک ہے، اس کی معیشت سب سے بڑی ہے اور اس کی فوج سب سے خطرناک۔‘

بل گیٹس کو پانچویں مقام پر شامل کرنے کی وجہ بتاتے ہوئے جریدے نے لکھا ہے کہ ملیریا کی روک تھام کے لیے ان کے مالی تعاون سے تیار کیے جانے والے ٹیکے نے مریضوں پر آزمائش کا مرحلہ کامیابی کے ساتھ پار کر لیا ہے۔

فیس بک کے مالک مارک زوکر برگ کے بارے میں فوربز نے لکھا ہے کہ ’جو سی آئی اے ساٹھ سال میں نہیں کر سکی وہ زوکربرگ نے سات سال میں کر دکھایا ہے۔ یعنی یہ معلوم کرنا کہ اسی کروڑ لوگ کیا سوچ رہے ہیں، کیا پڑھ رہے ہیں اور کیا سن رہے ہیں۔‘

اسی بارے میں